شہید ملت‘ شہید حریت ‘شہدائے حول کی برسیاں‘تقریبات آجشروع ہونگی

شہید ملت‘ شہید حریت ‘شہدائے حول کی برسیاں‘تقریبات آجشروع ہونگی

سرینگر(اے این این ) کل جماعتی حریت کانفرنس کی ایگزکیٹو کونسل، جنرل کونسل اور ورکنگ کمیٹی کا ایک غیر معمولی اجلاس چیئرمین میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق کی صدارت میں حریت صدر دفتر پر منعقد ہوا۔جس میں حریت سے وابستہ اکائیوں کے سربراہوں اور نمائندوں نے شرکت کی ۔ اجلاس میں موجودہ سیاسی ، تحریکی اور تنظیمی صورتحال کے مختلف پہلوؤں پر تفصیل کے ساتھ غور و خوض کیا گیا۔اجلاس میں جموں کشمیر کی موجودہ سیاسی و تحریکی صورتحال کے مختلف پہلوؤں کے ساتھ ساتھ شہید ملت میرواعظ مولولانا محمد فاروق ، شہید حریت خواجہ عبد الغنی لون اور شہدائے حول کی برسیوں کی مناسبت سے(آج) 16 مئی سے شروع ہورہے ہفتہ شہادت کی تقریبات کو حتمی شکل دینے اور ان تقریبات کو شایان شان طریقے سے منانے کا فیصلہ کیا گیا ۔

اجلاس میں شہید ملت، شہید حریت ، شہدائے حول اور جملہ شہدائے کشمیر کو ان کی عظیم الشان اور غیر معمولی قربانیوں پر خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا گیا کہ کشمیریوں کی حق و انصاف پر مبنی تحریک اور یہاں کے عوام کو اپنے جائز حقوق دلانے کی جد وجہد میں جہاں یہاں کے عوام نے بے پناہ جانی و مالی قربانیاں پیش کی ہیں اور کر رہے ہیں وہیں قیادت کی سطح پر بھی دی گئی قربانیاں رواں تحریک آزادی کا ایک درخشان باب ہے۔ اجلاس میں حکومت ہندوستان اور اس کے ریاستی حلیفوں کی جانب سے کشمیری عوام کیخلاف جاری جارحانہ کارروائیوں، وادی کے طول و عرض میں نہتے مظاہرین خصوصا جنوبی کشمیر میں طاقت و تشدد کے بے پناہ استعمال کو سرکاری دہشت گردی کا بدترین مظاہرہ قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ پورے کشمیر کو فوجی چھاونی میں تبدیل کرکے نہتے عوام کیخلاف ظلم و بر بریت کی انتہا کی جارہی ہے ۔

اجلاس میں عالمی برادری اور حقوق بشر کے عالمی اداروں سے اپیل کی گئی کہ وہ کشمیر کی موجودہ سنگین صورتحال کا جائزہ لے اور یہاں کے عوام پر ڈھائے جارہے مظالم کے خاتمے کیلئے اپنا موثر کردار ادا کریں۔اس دوران حریت نے اسلامک یونیورسٹی میں زیر تعلیم طالب علم کو والد سمیت گرفتار کرنے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ فورسز کی جانب سے یونیورسٹی بس کو روک کر اس میں سوار طالب علموں کو ہراساں کرنا انہیں پشت بہ دیوار کرنے کے مترادف ہے۔

مزید : عالمی منظر