جنوبی پنجاب کے وکلاء بیدار‘ ملتان بنچ سے کوئی زیادتی نہیں ہونے دینگے‘ خالد اشرف

جنوبی پنجاب کے وکلاء بیدار‘ ملتان بنچ سے کوئی زیادتی نہیں ہونے دینگے‘ خالد ...

ن (خبر نگار خصوصی)صدرہائیکورٹ بارخالداشرف خان نے کہاہے کہ جنوبی پنجاب کی بارایسوسی ایشنزضلع لودھراں اورساہیوال کودیگر بینچزمیں مقدمات دائرکرنیکااختیار(بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

دینے اورضلع کچہری کی جوڈیشل کمپلیکس میں منتقلی کومستردکرتے ہوئے ایسے اقدامات قانون وانصاف کے نام پردھبہ اورباروبینچ کے مابین خوشگوارتعلقات کی نفی کے مترادف قراردیتے ہیں اورمطالبہ کیاہے کہ مذکورہ احکامات واپس لینے اورضلع کچہری کوموجودہ جگہ پرتوسیع دینے،انکم ٹیکس،سروس،ماحولیات،کسٹم اور دیگر تمام ٹربیونلزملتان میں قائم کرنے کے ساتھ جنوبی پنجاب کی تمام بارایسوسی ایشنز کودرپیش مسائل حل کیاجائے۔ان مطالبات کااظہارانہوں نے گزشتہ روزہائیکورٹ بارایسوسی ایشن کے زیراہتمام منعقدہ جنوبی پنجاب کی بارایسوسی ایشنزکے کنونشن میں پیش کی گئی قراردادمیں کیا گیاانہون نے کہاکہ جن حالات سے ہائیکورٹ وڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشنزگذری ہیں وہ کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں اوراس وقت جنوبی پنجاب کی تمام بارایسوسی ایشنزایک بحران سے گذررہی ہیں جس میں پہلے ملتان بینچ کوبندکیاگیااورپھر ڈسٹرکٹ بارکوجنگل بیاباں میں دھکیل دیاگیااوراس کے بعدلودھراں اورساہیوال کولاہور اوربہاولپوربینچ میں مقدمات دائرکرنے کااختیاردیاگیاجبکہ وہاں ملتان بینچ کی نسبت 50 فیصد سے کم مقدمات دائرہوناکھلاریفرنڈم ہے جس کاوکلاء نے مقابلہ کیااورجنوبی پنجاب کی تمام بارایسوسی ایشنزمتحدہوئیں جس کاپہلا نتیجہ یہ نکلاکہ حق کوبلاآخرفتح نصیب ہوئی اور ضلع کچہری ملتان واپس منتقل ہوگئی لیکن ابھی تک کمیٹیاں قائم کرنے کے باوجودلودھراں اورساہیوال کے متعلق نہ تونوٹیفکیشن واپس لیاگیاہے اورنہ ہی ضلع کچہری کومستقل طورپر موجودجگہ پرتوسیع دینے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہاجنوبی پنجاب کے وکلاء پاکستان میں کہیں بھی ہیں وہ جاگ رہے ہیں اوراوکاڑہ اورپاکپتن کی طرح ملتان بینچ سے اب مزیدکوئی زیادتی نہیں ہونے دیں گے اورمطالبہ کرتے ہیں کہ بنیچوں کے معاملہ پر تمام سٹیک ہولڈرزکوسماعت کرکے ایک اصول طے کرکے فیصلہ کیاجائے۔صدرڈسٹرکٹ بارملتان ملک محبوب علی سندیلہ نے کہاہے کہ مذکورہ اجلاس 2 ماہ پہلے منعقد ہوناچاہیے تھاتاہم ماہ رمضان کے بعداسی مقام پرڈسٹرکٹ بارکی میزبانی میں اجلاس منعقدکیاجائے گااوراس سے قبل تمام بارایسوسی ایشنزمیں جاکران کے مسائل سنیں گیاوران کے حل کے لئے مشترکہ کوششیں کی جائیں گی۔سابق صدرہائیکورٹ بار شیرزمان قریشی نے کہاکہ اگرساہیوال اور لودھراں کوملتان بینچ سے علیحدہ کیاگیاہے تو بھکر،شورکوٹ اوراحمدپورسیال کی بھی ملتان بینچ کے ساتھ منسلک کرنے کی قراردادیں موجودہیں توان پرعمل کیاجائے ۔ممبرپنجاب بارکونسل سید جعفرطیاربخاری نے کہاکہ ساہیوال کے وکلاء ملتان بینچ کے ساتھ منسلک ہوناچاہتے ہیں اس لئے ان کوہراقدام میں شامل رکھنے کے ساتھ اس پلیٹ فارم سے علیحدہ صوبے کی تحریک چلائی جائے توتمام مسائل حل ہوسکتے ہیں ۔ممبرپنجاب بار کونسل چوہدری داؤداحمدوینس نے کہاکہ اس موقع پرکسی کی حوصلہ شکنی نہیں کرنی چاہیے اورسب کوساتھ لے کرچلیں نیز اس اجلاس کی قراردادیں چیف جسٹس پاکستان اورلاہور ہائیکورٹ کوبھجوائی جائیں۔ صدرٹیکس بارملتان بشیراحمد انصاری نے کہاکہ اس خطے کے مسائل اس وقت تک حل نہیں ہوسکتے جب تک علیحدہ صوبہ اورخودمختارہائیکورٹ حاصل نہیں کرلیتے اوراس کے لئے جدوجہدکرنی چاہیے جبکہ ٹیکس بار کو بھی اپیلوں کی سماعت کے لئے مختلف مسائل کاسامناہے۔صدردنیاپوربارمیاں محمدتنویر ارائیں،صدرکوٹ ادوبارسید شبیر عباس،صدرجہانیاں بارمحمدلطیف خان خٹک ،صدر کبیروالہ بارراناعمردرازنے کہاکہ جنوبی پنجاب کی بارایسوسی ایشنز کوبہت سے مسائل کا سامناہے جس کے لئے ایک متفقہ لائحہ عمل طے کرنے کی ضرورت ہے ۔اجلاس میں نائب صدرہائیکورٹ بارعقیل یوسف بھٹی،کنورمحمدیونس،شیخ عتیق الرحمن اوربشریٰ نقوی نے بھی خطاب کیاہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر