اینٹی کرپشن کا چھاپہ‘ڈیڑھ کروڑ سے زائد کے غبن میں ملوث پٹواری گرفتار

اینٹی کرپشن کا چھاپہ‘ڈیڑھ کروڑ سے زائد کے غبن میں ملوث پٹواری گرفتار

ملتان (نمائندہ خصوصی) اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ملتان کی خصوصی ٹیم نے چھاپہ مار کر صوبائی محکمہ ہائی وے میں ڈیڑھ کروڑ روپے سے زائد کے غبن میں ملوث واپڈا ٹاؤن ملتان کے پٹواری محمد (بقیہ نمبر46صفحہ12پر )

ابراہیم کو گرفتار کرلیا ہے۔ تفتیش کے دوران ملزم نے جعلی رجسٹریوں پر اراضی مالکان بنا کر ڈیڑھ کروڑ روپے سے زائد کا غبن قبول کرلیا اور اپنے حصے کی رقم واپس کرنے پر آمادگی ظاہر کردی ہے۔ ملزم نے فراڈ اور جعلسازی کو چھپانے کیلئے لینڈ ایکوزیشن کا ریکارڈ ریٹائرمنٹ سے پہلے ہی غائب کرادیا۔ موجودہ لینڈ ایکوزیشن کلکٹررائے عنایت نے ریکارڈ گمشدگی کی رپورٹ اینٹی کرپشن کو پیش کردی۔ بتایا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے دور میں چونگی 9سے فش مارکیٹ تک سڑک کیلئے اراضی ایکوائر کی گئی اور متاثرین کو ان کی زمین کی قیمت بھی ادا کردی گئی لیکن روڈ پر ایل اے سی محمد وسیم‘ ظفراقبال پٹواری مہب اقبال اور محمد ابراہیم نے ملزم سجاد شاہ شوکت شاہ‘ محمد سعید‘ محمد حنیف‘ شفیق احمد‘ اقبال شاہ جعفر شاہ کی ملی بھگت سے آبادی دیہہ کی جعلی دستاویزات تیار کیں اور اراضی مالکان شو کرکے ملزمان نے ایک کروڑ 60لاکھ روپے کی رقم آپس میں تقسیم کرلی جس پر اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ملتان ریجن نے مذکورہ ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔ دوران تفتیش ملزمان کے خلاف ثبوت مرتب کرلیے جس کے بعد پہلے پٹواری مہب اقبال کو گرفتار کیا گیا۔ اسی دوران ملزم ابراہیم پٹواری غائب ہوگیالیکن اینٹی کرپشن کے اے ایس آئی زاہد اقبال سہو نے ملزم کی گرفتاری کیلئے کارروائی جاری رکھی۔ گزشتہ روز زاہد اقبال نے اپنی ٹیم کے ہمراہ ملزم کو واپڈا ٹاؤن ملتان کے نزیک گرفتار کرلیا۔ معلوم ہوا ہے کہ ملزم نے اس موقع پر گرفتاری ٹیم کو رہائی کے عوض 5لاکھ روپے کی پیشکش کی اور اپنے اثرورسوخ کی بنا پر دبانے کی کوشش بھی کی۔ ملزم نے تفتیش کے دوران انکشاف کیا ہے کہ ڈیڑھ کروڑ روپے سے زائد کا غبن لینڈ ایکوزیشن کلکٹر کے احکامات پر کئے گئے‘ جس اراضی مالکان کی دستاویزات سجاد شاہ نامی شہری نے تیار کیں ملزم نے دوران تفتیش کروڑوں روپے کے غیرقانونی اثاثہ جات بھی تسلیم کرلئے ہیں جس پر ڈائریکٹر اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ملتان انجینئر امجد شعیب ترین نے انوسٹی گیشن آفیسر آصف نور کو تحقیقات کا دائرہ وسیع کرنے کی ہدایات دیں۔ انہوں نے کہا کہ لینڈ ایکوزیشن میں فراڈ کے میگا کیسز سامنے آرہے ہیں جن پر تحقیقات کا دائرہ وسیع کیا جارہا ہے۔ انجینئر امجد شعیب ترین نے کہا کہ یہ ایک مافیا ہے جس کو قانون کے دائرہ میں لانا ضروری ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...