اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید فلسطینیوں کی تعداد 60ہو گئی : تدفین

اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید فلسطینیوں کی تعداد 60ہو گئی : تدفین

غزہ)مانیٹرنگ ڈیسک،صباح نیوز) امریکی سفارت خانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی پر غزہ میں احتجاج کے دوران اسرائیلی فوج کی براہ راست فائرنگ سے جاں بحق فلسطینیوں کی تعداد 60ہوگئی۔شہداء میں 16 معصوم بچے بھی شامل ہیں جبکہ 2700 افراد زخمی بھی ہوئے۔ شہید ہونے والے فلسطینیوں کو سپرد خاک کردیا گیا ۔فلسطینی صدر محمود عباس نے قتل و غارت کے خلاف 3روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے،صباح نیوز کے مطابق فلسطین میں یوم سقوط فلسطین کے حوالے سے صدر محمود عباس کی اپیل پر ہڑتال کی گئی جب کے گزشتہ روز غزہ اسرائیل سرحد پر احتجاج کے دوران شہید ہونے والوں فلسطینیوں کی تدفین بھی کی گئی ، اس موقع پر سوگ کا سا سماں رہا اور ہر آنکھ اشک بار تھی ۔ فلسطین کے صدر نے تین روزہ سوگ کا بھی اعلان کیا ۔غزہ سرحد پر گزشتہ کئی ہفتوں سے جاری ہفتہ وار مظاہروں کا انتظام کرنے والی کمیٹی کے سربراہ خالد باتش نے کہا کہ جنازوں کا دن ہے، ہم اپنے شہدا ء کو سپرد خاک اور شہدا کے لہو کو رائیگاں نہیں جانے دینے کے عزم کا عہد کررہے ہیں ۔ غزہ میں اسرائیلی فائرنگ سے زخمی ہونیوالوں سے ہسپتال بھر گئے ، ہسپتالوں میں ادویات کی قلت پیدا ہو گئی، عملے کو مشکلا ت کا سامنا ہے ، مصر سے مدد کی اپیل کی گئی ۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطین کے علاقے غزہ میں اسرائیلی فوج کی جانب سے ڈ ھا ئی جانیوالی قیامت کے نتیجے میں ہزاروں فلسطینی زخمی ہوئے جس کی وجہ سے فلسطین کی قومی کمیٹی برائے حق واپسی اور وزارت صحت نے مصری حکومت اور فلسطینی اتھارٹی سے زخمیوں کے علاج میں فوری مدد کی اپیل کی ہے۔ غزہ میں سپریم کمیٹی برائے انسداد ناکہ بندی اور غزہ میں وزارت صحت نے اپنے بیانات میں کہا ہے اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کارروائیوں سے اڑھائی ہزار فلسطینی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔ غزہ کے ہسپتال زخمیوں سے بھر گئے ہیں۔ بڑی تعداد میں فلسطینی شدید زخمی ہیں۔ انہیں فوری سرجری کی ضرورت ہے۔ غزہ کے ہسپتالوں میں ادویات کی قلت پڑ گئی ہے اور عملے کو بھی شدید مشکلات کا سامنا ہے۔بیانات میں مصراور عرب ممالک سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ غزہ کے زخمیوں کو اپنے ہاں لے جانے کی اجازت دینے کے ساتھ غزہ کو طبی عملہ اور ادویات ارسال کریں تاکہ زخموں سے چور فلسطینیوں کا علاج کرکے ان کی زندگیاں بچائی جاسکیں۔فلسطینی سپریم کمیٹی نے اسرائیلی فوج کے وحشیانہ تشدد سے شدید زخمی ہونیوالے فلسطینیوں کا غرب اردن کے ہسپتالوں میں علاج کرانے پر بھی زور دیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے فلسطینی اتھارٹی کی قومی ذمہ داری ہے کہ وہ غزہ کی پٹی میں مظاہرین پر اسرائیلی فوج کے حملوں میں زخمی ہونیوالے شہریوں کی علاج میں مدد فراہم کرے۔

فلسطین/شہداء

مزید : کراچی صفحہ اول