کوہاٹ میں صوبائی وزیر قانون کی استرزئی میں غیر قانونی بھرتیاں

کوہاٹ میں صوبائی وزیر قانون کی استرزئی میں غیر قانونی بھرتیاں

کوہاٹ(بیورو رپورٹ) صوبائی وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی کی RHC استرزئی میں غیر قانونی اور ناجائز بھرتیاں‘ کٹھ پتلی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈی ایچ او کوھاٹ سیاسی لیٹروں کے غلام بن گئے ہیں گاؤں کی زمین پر درجہ چہارم کی آسامیوں پر کسی کی بھی بدمعاشی نہیں چلے گی ناظم ویلج کونسل استرزئی بالا صفدر حسین کی وارننگ اور ضلعی انتظامیہ کی مجرمانہ خاموشی پر سخت افسوس کا اظہار کرتے ہیں ان خیالات کا اظہار پاکستان تحریک انصاف کے سرگرم رکن ناظم ویلج کونسل استرزئی بالا صفدر حسین نے آر ایچ سی استرزئی میں صوبائی وزیر قانون کی طرف سے درجہ چہارم پوسٹوں پر غیر قانونی بھرتیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ استرزئی بالا قوم نے بغیر قیمت 25 کنال زمین سکول اور آر ایچ سی ہسپتال استرزئی کے لیے دی ہے اور آر ایچ سی استرزئی میں ابھی تک ایک پوسٹ بھی نہیں ملی اور اب حکومتی ڈاکوؤں کی وجہ سے مقامی لوگوں کے بجائے شکردرہ کے لوگ آر ایچ سی میں بھرتی کیے گئے ہیں جس میں کٹھ پتلی ڈی ایچ او ڈاکٹر مشرف اور ان کا سٹاف برابر کے شریک ہیں احتجاجی مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ اگر آر ایچ سی میں مقامی لوگوں کو بھرتی نہ کیا گیا تو بنی گالہ کے سامنے دھرنا دیں گے اور وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی کی غیر قانونی طور ناجائز بھرتیوں کے خلاف ہر پلیٹ فارم پر آواز بلند کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...