میڈیا سمیت تمام اداروں پر عسکری قوتوں کا کنٹرول ، نواز حکومت کو چلنے نہیں دیا : مخدوم جاوید ہاشمی

میڈیا سمیت تمام اداروں پر عسکری قوتوں کا کنٹرول ، نواز حکومت کو چلنے نہیں دیا ...

ملتان (نیوز رپورٹر) مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ نواز شریف کی حکومت کو پانچ سال تک عسکری قوتوں نے نہیں چلنے دیا اگر نواز شریف نے بمبئی حملے کے بارے میں کوئی بیان دیا ہے تو اس سے قبل پرویز مشرف، جنرل درانی اور رحمان ملک بھی یہی سوال پوچھ چکے ہیں اگر نواز شریف پر مقدمہ چلانا ہے تو اس سے قبل پرویز مشرف پر چلایا جائے اور نواز شریف کی پیش کش کے مطابق قومی کمیشن بنایا جائے طالع آزما جرنیلوں کی غلط حکمت عملی کی وجہ سے پاکستان پانچوں جنگیں ہار گیا جبکہ سویلین قیادت نے قوم کو پھر سر اٹھا کر چلنے کا حوصلہ دیا نیب ،عدالت ایک واشنگ مشین بنی ہوئی ہے جس میں سیاستدانوں کو اپنی مرضی کے مطابق دھویا جارہا ہے عسکری ودیگر تمام اداروں کو آخر کار عوام اور پارلیمنٹ کے سامنے سرجھکانا ہو گا اسٹیبلیشمنٹ نے ہمیشہ عوام اور سیاستدانوں کے درمیان نفرت کی دیواریں کھڑی کرنے کی کوشش کی ججوں اور جرنیلوں کے اثاثے کھولے جائیں تو کوئی صادق اور امین نہیں ملے گا موجودہ حالات جاری رہے تو ملک کو تباہی و بربادی کی طرف جانے سے کوئی نہیں روک سکتا ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملتان پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران کیا اس موقع پر مسلم لیگ (ن) کے ضلعی صدر بلال بٹ، جنرل سیکریٹری شیخ اطہر ممتاز ودیگر رہنما شاہد مختار لودھی، منیر اختر لنگا، راؤ ابرار، عابد باکسر بھی موجود تھے مخدوم جاوید ہاشمی نے مزید کہا کہ عسکری قوتوں نے میڈیا سمیت تمام اداروں کو کنٹرول میں کیا ہوا ہے اس وقت ملک کے حالات سو فی صد خراب ہیں طالع آزما جرنیلوں نے کبھی بھی سیاسی قیادت کو پنپنے نہیں دیا 80فی صدجرنیلوں نے اپنی کتابوں میں لکھا ہے کہ پانچوں جنگیں پاکستان نے شروع کیں اور پاکستان ہی ہار گیا ہاری ہوئی جنگوں کے نتائج غریب عوام کو بھگتنا پڑ رہے ہیں پہلے دن سے ہی نوا ز شریف کی حکومت کو گرانے کے لئے سازشیں شروع ہو گئی تھیں عمران خان کو دھرنوں کی وجہ سے خواہ مخواہ بدنام کیا جارہا ہے وزیراعظم بننے کی کوشش میں عمران خان بھی ان کے ہاتھوں میں استعمال ہو رہے ہیں لیکن وہ اسے بھی وزیراعظم نہیں بنائیں گے بلکہ ملک مزید بحرانوں میں گھر جائے گا جب میں نے خودکش حملہ کرکے جمہوریت کو بچایا تھا اور پانچ جرنیلوں کی سازش بے نقاب کی تھی تو سپریم کورٹ نے مجھے اور ان جرنیلوں کو کیوں نہیں بلایا سویلین حکومتیں بنانے اور گرانے کا سلسلہ ایوب خان سے لیکر آج تک جاری ہے نواز شریف کے خلاف درجنوں سازشیں جاری ہیں انہوں نے کہا کہ نیب ایک تھرڈ کلاس عدالت ہے جس میں فائلوں کا اتنا بڑا پہاڑ کھڑا کردیا جاتا ہے کہ آدمی اسے دیکھ کر گر جاتا ہے عسکری قیادت نے جس شخص کو را کا ایجنٹ قرار دیا تھا اور جس نے انڈیا کے ٹینکوں پر بیٹھ کر آنے کی بات کی تھی آج وہ عمران خان کے ساتھ بیٹھا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان نے فوج سمیت تمام اداروں کو جنم دیا ہے فوج ہماری ماں اور باپ نہیں ہے بلکہ پاکستان اور پارلیمنٹ ہماری ماں اور باپ ہے اداروں کو کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ ہاتھ دھو کر نواز شریف کے پیچھے پڑ جائیں نواز شریف نے یہی سوال پارلیمنٹ میں بھی اداروں سے پوچھا تھا جس کا انہیں جواب نہیں دیا گیا جس طرح ایوب خان ودیگر ڈکٹیٹروں نے سیاستدانوں کو ایبڈو کیا تھااب نواز شریف ودیگر رہنماؤں کو عدا لتی ایبڈو کروایا جارہا ہے میں فوج ، (ن) لیگ ، تحریک انصاف ، جماعت اسلامی، تحریک استقلال اور اداروں کے اندر کا بندہ ہوں میں سب کو آگاہ کررہا ہوں کہ ملک کو تباہی کی طرف دکھیلا جارہا ہے جو سوال نواز شریف پوچھ رہا ہے وہی سوال میں بھی پوچھ رہا ہوں نواز شریف اور مجھے پھانسی دے دو لیکن یہی بات مشرف اور جنرل درانی نے بھی کی تھی میں جیل میں ہوں یا باہر ہوں مجھے اپنی زات کی کوئی پرواہ نہیں نواز شریف کے ساتھ کھڑا تھا کھڑاہوں اور کھڑا رہوں گا نواز شریف سے بڑا محب وطن کوئی نہیں ہے اداروں نے ہمیشہ سویلین حکومتیں گرائیں اور رہنماؤں پر حملے کئے حکومتیں گرانے کے لئے مختلف طریقے کار استعمال کئے جب یہ جنگیں ہارتے ہیں تو بھٹو کو اٹلی سے بلاتے ہیں پریشر میں ہوں تو بے نظیر کو بلاتے ہیں کارگل ہوتو نواز شریف کو آگے کر دیتے ہیں چرچل نے کہا کہ جنگوں کو جرنیلوں کے فیصلوں پر نہیں چھوڑا جا سکتا ہے جنگیں جیتنا قوموں کا کام ہے یہ لوگ وزیراعظم کو اپنا ملازم سمجھتے ہیں اپنی مرضی سے حکومتیں بناتے اور توڑتے ہیں اب وقت آرہا ہے کہ یہ وزرات عظمی کسی کو پلیٹ میں بھی رکھ کردیں گے تو کوئی وزراعظم بننے کے لئے تیار نہیں ہو گا شائد عمران خان وزارت عظمی کے لئے تیار ہو جائے جب چاروں صوبوں سے آوازیں اٹھیں گی تو پھر پارلیمانی بالادستی کو قبول کرنا پڑے گا انہوں نے کہا کہ کس نے بلوچستان حکومت گرائی نیا وزیراعلی بنوایا اور سینیٹ کا چیئرمین بھی اپنا بنوا لیا اب سارے معاملات کھل کر سامنے آچکے ہیں میڈیا کو مکمل کنٹرول کر لیا گیا ہے جس کا ثبوت یہ ہے کہ وزیراعظم کی تقریر سرکاری ٹی وی پر بھی نہیں چلنے دی گئی نواز شریف کو سزا دینے کے لئے یہ اقامہ کون نکال کر لایا اگر اقامہ نہ ہوتا تو باقی تمام مقدمات میں میاں نواز شریف کو سزا نہیں دی جا سکتی تھی ان عدالتوں کے مطابق پورے ملک میں صرف ایک شخص عمران خان ہی صادق و امین ہے جو بھی سیاسی جماعتیں پاکستان میں مضبوط ہونے کی کوشش کرتی ہیں انہیں یہ لوگ کمزور کر د یتے ہیں پارلیمنٹ اور اداروں کو موجودہ حالات پر قومی کمیشن بنانا چاہیئے اور پھر میثاق پاکستان طے کیاجائے ۔

جاوید ہاشمی

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...