فلسطینی شہید 72،زخمی 34سو ہوگئے : امریکہ نے سلامتی کونسل کو تحقیقات سے روک دیا

فلسطینی شہید 72،زخمی 34سو ہوگئے : امریکہ نے سلامتی کونسل کو تحقیقات سے روک دیا
فلسطینی شہید 72،زخمی 34سو ہوگئے : امریکہ نے سلامتی کونسل کو تحقیقات سے روک دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

غزہ(ویب ڈیسک) غزہ کی پٹی میں امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کے خلاف پرامن احتجاج کرنیوالے فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فائرنگ سے مزید فلسطینی شہید ہوگئے، شہیدوں کی تعداد 71 ہوگئی ہے۔ ان میں 8 ماہ کا بچہ بھی شامل ہے جبکہ دیگر 3400 زخمیوں میں سے 54 کی حالت بدستور تشویشناک ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

دوسری طرف فلسطینیوں کے قتل عام کی سلامتی کونسل کی تحقیقات کی درخواست امریکہ نے روک دی۔ ڈرافٹ میں فلسطینیوں کے قتل عام پر اظہار افسوس کرتے ہوئے مطالبہ کیا تھا قتل عام کی تحقیقات کی جائے۔ علاوہ ازیں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق تنظیم کا کہنا ہے کہ غزہ میں اسرائیلی فائرنگ سے فلسطینیوں کے جانی نقصان کا عالمی برادری نوٹس لے اور ذمہ داروں کو انجام تک پہنچانا چاہئے۔ اردگان نے اسرائیل کو دہشت گرد ریاست قرار دیتے ہوئے فلسطینیوں سے یکجہتی کیلئے تین روزہ سوگ کا اعلان کر دیا اور کہا فلسطینیوں کی نسل کشی پر چپ رہنے والوں پر لعنت بھیجتا ہوں۔ نتین یاہو کے ہاتھ فلسطینیوں کے خون سے رنگے ہیں دریں اثناءاسلامی ملکوں کی انٹر پارلیمنٹری یونین کی فلسطین کمیٹی نے بیت المقدس کی مرکزیت میں ایک آزاد فلسطینی مملکت کے قیام اور فلسطینی پناہ گزینوں کی واپسی پر زور دیا ہے۔

ادھر عرب لیگ نے کہا ہے کہ امریکی سفارت خانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کے امریکی اقدام کی خوشی منانے والے ممالک کا عمل شرمناک ہے اور کہا انٹرنیشنل کریمنل کورٹ فلسطینیوں کے قتل عام، اسرائیلی جرائم کی انکوائری کرے۔ ایندھن کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہسپتالوں، صفائی، نکاسی آب حتیٰ کے پانی کی فراہمی جیسے معاملات مشکل ہوتے جا رہے ہیں۔ دوسری طرف غزہ میں اسرائیلی فائرنگ سے زخمی ہونیوالوں سے ہسپتال بھر گئے اور وہاں ادویات کی قلت پیدا ہو گئی جبکہ یمنی حوثی باغیوں نے امریکی سفارتخانے کی منتقلی کی شدید مذمت کی ہے۔

چین کی وزارت خارجہ نے اسرائیل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فلسطینیوں کے خلاف مظالم بند کرے جبکہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام غاصمی نے کہا یتن یاہو پر عالمی عدالت میں جنگی جرائم کا مقدمہ چلایا جائے۔ ترکی نے اسرائیلی سفیر کو ملک چھوڑنے کا حکم دیدیا۔ اسرائیلی سفارتخانے کی منتقلی پر متنازعہ پادریوں رابرٹ یفریز اور ریووہن نے تقریب میں دعائیں کرائیں۔ سفارتخانے کی منتقلی کے حق میں بول پڑے۔ آئرلینڈ نے فلسطینیوں کی شہادت پر اسرائیلی سفیر کو طلب کر کے احتجاج کیا۔ برطانیہ اور جرمنی نے غزہ سرحد پر شہادتوں اور تشدد کی غیرجانبدارانہ انکوائری کا مطالبہ ر دیا۔ روسی وزیر خارجہ کہا امریکی اقدام عالمی بردری کے فیصلے کے منافی ہے۔

مصری وزیر خارجہ نے کہا مشرقی بیت المقدس فلسطینی دارالحکومت ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کہا اسرائیل نے جنگی جرم کیا۔ مراکش کے بادشاہ محمد پنجم نے خط میں سفارتخانہ منتقلی پر شدید تحفظات کا اظہار کیا۔ گزشتہ روز غزہ میں سرحد پر اسرائیلی فائرنگ سے مزید 2فلسطینی شہید ہو گئے۔ آن لائن کے مطابق پرعزم فلسطینی اپنی سرزمین پر اسرائیلی قبضے کے 70 سال مکمل ہونے پر یوم نکبہ منارہے ہیں۔ کئی علاقوں میں ہڑتال رہی اور مظاہرے کئے گئے۔فلسطینیوں کی تدفین کا عمل بھی جاری رہا، غزہ میں تناﺅ برقرار ہے۔ ترک وزیراعظم بن علی یلدرم نے فلسطینی باشندوں کی شہادت پر اپنے شدید ردعمل کا اظہا کرتے ہوئے اسے بزدلانہ قتل عام قرار دیا اور کہا اسلامی ممالک اسرائیل سے تعلقات پر نظرثانی کریں۔

اے پی پی کے مطابق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے 15 ارکان میں سے 10 نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوئٹرس کو مراسلہ روانہ کر کے کونسل سے اسرائیل سے فلسطین کی مقبوضہ زمین پر غیر قانونی رہائشی بستیوں کی تعمیر کو بند کرنے کے مطالبے پر مبنی فیصلے کی پاسداری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ پاکستان کے مختلف شہروں میں اسرائیلی مظالم کے خلاف احتجاج بھی ہوا اور اسرائیلی پرچم نذرآتش کیے گئے۔ سعودی کابینہ کا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیرصدارت اجلاس ہوا۔ سعودی کابینہ کے مطابق امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی ناقابل قبول ہے۔ امریکی اقدام فلسطینیوں کے جائز حقوق کی کھلی حق تلفی ہے۔ اسرائیلی فوج کے ہاتھوں نہتے فلسطینیوں کے قتل عام کی مذمت کرتے ہیں۔ قومی اسمبلی اور سینٹ میں فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کیخلاف مذمتی قرار داد میں متفقہ طور پر منظور کر لی گئی۔

سینٹ میں قرارداد راجہ ظفرالحق نے پیش کی تھی۔ قرارداد کے مطابق اسرائیلی قابض افواج نے بچوں، خواتین سمیت 70 فلسطینیوں کو شہید اور ہزاروں کو زخمی کیا۔ سینٹ امریکی سفارتخانے کی منتقلی کے فیصلے کی مذمت اور مسترد کرتا ہے۔ بھارت کشمیر میں اور اسرائیل فلسطین میں انسانی حقوق کی پامالی کر رہے۔ اسرائیل اور بھارت کشمیر اور فلسطین میں ڈیموگرافکس تبدیل کر رہے ہیں۔ قومی اسمبلی نے فلسطین کے نہتے شہریوں پر اسرائیلی تشدد اور امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کی سخت مذمت کرتے ہوئے اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ نہتے فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم بند کرانے کے حوالے سے موثر اقدامات اٹھائے جائیں۔

وزیر مملکت برائے خزانہ رانا محمد افضل خان نے تحریک پیش کی پی ٹی آئی کی، رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر شیریں مزاری نے قرارداد پیش کی کہ یہ ایوان غزہ میں فلسطین کے نہتے شہریوں پر اسرائیلی مظالم‘ فلسطین پر اسرائیلی قبضے اور امریکہ کی طرف سے اپنا سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کی سخت مذمت کرتا ہے اور اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری سے مطالبہ کرتا ہے کہ اس صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے موثر اقدامات اٹھائے جائیں۔ او آئی سی اجلاس 18مئی کو استنبول میں ہو گا۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی وفد کی قیادت کرینگے، ترجمان دفتر خارجہ نے پھر نہتے فلسطینیوں کے قتل عام کی مذمت کی ہے اور مطالبہ کیا آزادانہ انکوائری کرائی جائے۔ بیلجیئم میں اسرائیلی سفیر کو طلب کر کے غزہ میں بربریت کی انکوائری کا مطالبہ کیا گیا اسرائیلی کریک ڈاﺅن کی وزیراعظم چارلی نے مذمت کی۔سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس ہوا۔ شرکاءاتفاق رائی اور کسی نتیجہ پر نہ پہنچ سکے۔ عرب سفراءنے غزہ میں بربریت کی انکوائری کا مطالبہ کیا۔ کویتی سفیر نے کہا مسودہ قرارداد تقسیم کرینگے۔ فلسطین نے امریکہ سے سفیر بلالیا۔

مزید : بین الاقوامی