نیب نے سلمان شہباز سے کیا سوال پوچھا تو وہ لندن بھاگ گئے ؟چیئر مین نیب نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

نیب نے سلمان شہباز سے کیا سوال پوچھا تو وہ لندن بھاگ گئے ؟چیئر مین نیب نے ...
نیب نے سلمان شہباز سے کیا سوال پوچھا تو وہ لندن بھاگ گئے ؟چیئر مین نیب نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )چیئر مین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ شہباز شریف کے صاحبزادے سلمان شہباز سے اربوں روپے سے متعلق سوال کیا تو وہ لندن چلے گئے ۔

سینئر صحافی جاوید چوہدری نے اپنے کالم ”چیئر مین نیب سے ملاقات “میں لکھا کہ جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے بتا یا کہ میاں برادران کا ایشو بھی سیدھا اورسادہ ہے ،ہم نے میاں شہباز شریف کے دامادعلی عمران کو بلا کر پوچھا صاف پانی کمپنی نے آپ کو 48کروڑ روپے کی ادائیگی کیوں کی اور یہ آپ کے اکاﺅنٹ میں جمع کیوں ہوئی؟ہم نے کاغذات بھی اس کے سامنے رکھ دئیے ،وہ بولا میں نے صاف پانی کمپنی کو اپنا پلازہ کرائے پر دیا تھا ،یہ کرائے کی رقم تھی ،ہم نے ان کو گھر جانے دیا ،میں رات کو ٹیکسی لے کر علی عمران کے پلازہ پر چلا گیا ،وہ پلازہ ابھی زیر تعمیر تھا ،پانچ منزلوں کی چھتوں کے کنکریٹ کو پانی دیا جا رہا تھا ،ہم نے اگلے دن علی عمران کو دوبارہ بلا لیا ،ہم نے اس سے پوچھا ،آپ کا پلازہ ابھی زیر تعمیر ہے ،یہ تین سال میں بھی مکمل نہیں ہو سکے گا لیکن آپ نے اس کا کرایہ وصول کر لیا ،کیوں اور کیسے ؟علی عمران کے پاس کوئی جواب نہ تھا ،وہ گھر گیا اور اگلے دن دبئی بھاگ گیا ۔

ہم نے سلمان شہباز کو بلا کر پوچھا ،آپ کو اربوں روپے باہر سے کیوں آتے رہے ،وہ بولے مجھے چند دن دے دیں ،میں اپنی فیملی اور سٹاف سے پوچھ کر جواب جمع کرا دوں گا ،ہم نے وقت دے دیا اور وہ بھی لندن بھاگ گئے ۔ہمارے پاس حمزہ شہباز شریف کے خلاف بھی تمام ثبوت موجود ہیں ،حمزہ شہباز کا سوال نامہ میں نے خود اپنے ہاتھ سے ڈرافٹ کیا تھا ،میں نے سیشن جج سے سپریم کرکٹ کا سینئر جج رہاہوں ،میں نے عدالتی بیک گراﺅنڈ کو سامنے رکھ کر سوالنامہ تیار کیا تھا ،ان کی ضمانت منسوخ ہونے کی دیر ہے جس کے بعد یہ بھی اندر ہو نگے ۔

مزید : قومی