شریف خاندا ن کیخلاف 7ارب کا نیا ریفرنس تیار، توشہ خانہ ریفرنس میں نواز شریف اور آصف زرداری نیب عدالت طلب

  شریف خاندا ن کیخلاف 7ارب کا نیا ریفرنس تیار، توشہ خانہ ریفرنس میں نواز شریف ...

  

لاہور /اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) قومی احتساب بیورو نے شریف خاندان کے خلاف 7 ارب کا ریفرنس تیار کر لیا۔ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں چیئرمین جاوید اقبال نے پری ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس سوموار کو طلب کر لیا جس میں نیب لاہور کی جانب سے بھجوائے گئے ریفرنس کے تمام پہلوؤں سے جائزہ لیا جائے گا۔نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق شریف خاندان کیخلاف ریفرنس میں 16 ملزمان، 4 وعدہ معاف گواہ اور 100 گواہان شامل ہیں۔ مرکزی ملزمان میں نواز شریف، شہباز شریف، مریم نواز، نصرت شہباز، بیگم شمیم شریف، سلمان شہباز، حسن نواز اور حسین نواز بھی شامل ہیں۔ریفرنس میں احد خان چیمہ، سابق ڈپٹی کمشنرز لاہور سمیت 22 بیوروکریٹس کے بیانات بھی شامل کیے گئے ہیں۔ نیب نے شہباز شریف، حمزہ شہباز اور مریم نواز سے 432 سے زائد بار اہم سوالات کئے لیکن وہ 80 فیصد سوالات کے جوابات نہ دے سکے۔اس کے علاوہ نیب نے شریف خاندان کے متعدد افراد کو سوالنامے بھجوائے لیکن تسلی بخش جواب بھی نہ ملے۔ شریف خاندان نے مبینہ منی لانڈرنگ اور غیر قانونی طریقے سے پیسہ بنایا۔ نیب لاہور کی جانب سے تیار کئے گئے 300 سے زائد صفحات پر مشتمل ریفرنس میں اہم دستاویزات شامل ہیں۔علاوہ ازیں توشہ خانہ ریفرنس میں احتساب عدالت نے نواز شریف اور آصف علی زرداری کو طلب کر لیا، سابق وزیراعظم یوسف گیلانی بھی توشہ خانہ ریفرنس میں 29 مئی کو عدالت پیش ہوں گے۔جعلی اکاؤنٹس کیس میں اہم پیشرفت، توشہ خانہ ریفرنس پر سماعت کے دوران نیب نے عدالت کو آگاہ کیا کہ آصف زرداری اور نواز شریف نے یوسف رضا گیلانی سے غیر قانونی طور پر گاڑیاں حاصل کیں، آصف زرداری نے گاڑیوں کی صرف 15 فیصد ادائیگی کی، رقم جعلی اکاونٹس کے ذریعے ادا کی گئی۔ نیب کے مطابق آصف زرداری کو بطور صدر، لیبیا اور یو اے ای سے بھی گاڑیاں تحفے میں ملیں، آصف زرداری نے گاڑیاں توشہ خانہ میں جمع کرانے کے بجائے خود استعمال کیں۔نیب کی جانب سے نواز شریف سے متعلق عدالت کو بتایا گیا کہ سال 2008 میں وہ کسی بھی سرکاری عہدے پر نہیں تھے، اس کے باوجود نوازشریف کو بغیر کوئی درخواست دیئے توشہ خانے سے سرکاری گاڑی مہیا کی گئی۔گاڑیوں کی ادائیگی عبدالغنی مجید نے جعلی اکاؤنٹس سے کی، انور مجید نے انصاری شوگر ملز کے اکاؤنٹس کا استعمال کر کے 2 کروڑ سے زائد کی غیر قانونی ٹرانزیکشنز کیں، اس کے علاوہ انور مجید نے آصف زرداری کے اکاؤنٹس میں بھی 9.2 ملین روپے ٹرانسفر کیے جب کہ عبدالغنی مجید نے 37 ملین روپے کسٹم کولیکٹر اسلام آباد کو ٹرانسفر کیے۔مزید برآں احتساب عدالت نے نیب کو آصف زرداری کے اعتراضات پرجواب جمع کرانے کی مہلت دے دی۔تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں سابق صدر آصف زرداری کی کلفٹن کراچی کا گھر ضبط کرنے کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی،جج محمد بشیر نیآصف علی زرداری کی درخواست کی سماعت کی۔اس موقع پر نیب نے جواب داخل کرانے کے لئے مزید مہلت کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے نیب کو اکیس مئی تک تحریری جواب جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔

ریفرنس/طلبی

مزید :

صفحہ اول -