کورونا، پاکستان میں مزید 31جاں بحق،1434نئے کیسز

کورونا، پاکستان میں مزید 31جاں بحق،1434نئے کیسز

  

اسلام آباد،لاہور، کراچی،پشاور، کوئٹہ (سٹاف رپورٹرز، نیوز ایجنسیاں) ملک میں گزشتہ روز کورونا وائرس سے مزید 31 اموات ہوئیں جس کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 833 ہوگئی جبکہ نئے کیسز سامنے آنے سے مصدقہ مریضوں کی تعداد 38594 تک جاپہنچی۔اب تک سب سے زیادہ اموات خیبرپختونخوا میں سامنے آئی ہیں جہاں کورونا سے 291 افراد انتقال کرچکے ہیں جبکہ سندھ میں 255 اور پنجاب میں 245 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔اس کے علاوہ بلوچستان میں 30، اسلام آباد 7، گلگت بلتستان میں 4 اور آزاد کشمیر ممیں مہلک وائرس سے ایک شخص جاں بحق ہوا ہے۔ بروز جمعہ ملک بھر سے کورونا کے مزید 1434 کیسز اور 31 ہلاکتیں سامنے آئیں جن میں سندھ سے 817 کیسز 12 ہلاکتیں، پنجاب میں 287 کیسز اور 11 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 255 کیسز اور 7 ہلاکتیں، اسلام آباد44 کیسز ایک ہلاکت، گلگت بلتستان سے 17 اور آزاد کشمیر سے مزید 14 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ سندھ سے کورونا وائرس کے مزید 817 کیسز اور 12 ہلاکتیں سامنے آئیں جس کی تصدیق وزیراعلیٰ سندھ نے کی۔مراد علی شاہ نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 5566 ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے مزید 817 نئے کیسز ظاہر ہوئے اور 12 ہلاکتیں بھی ہوئی ہیں جس کے بعد صوبے میں کیسز کی مجموعی تعداد 14916 اور اموات 255 ہوگئی ہیں۔وزیراعلیٰ کے مطابق 24 گھنٹوں میں مزید 533 مریض صحتیاب بھی ہوئے جس سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد 3066 ہوگئی ہے۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا وائرس کے مزید 58 کیسز سامنے آئے اور ایک ہلاکت بھی ہوئی جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کی گئی۔سرکاری پورٹل کے مطابق نئے کیسز سامنے آنے کے بعد اسلام آباد میں کیسز کی مجموعی تعداد 866 ہو گئی جبکہ ایک ہلاکت کے بعد دارالحکو مت میں وائرس سے جاں بحق افراد کی تعداد 7 ہوگئی۔آزاد کشمیر سے کورونا کے مزید 14 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ ہوئے۔پورٹل کے مطابق علاقے میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 105 ہوگئی جبکہ علاقے میں اب تک وائرس سے ایک ہلاکت ہوئی ہے۔سرکاری پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا سے اب تک 76 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔خیبر پختونخوا میں جمعے کو کورونا کے مزید 255 کیسز رپورٹ ہوئے اور 7 ہلاکتیں بھی سامنے آئیں جس کی تصدیق صوبائی محکمہ صحت نے کی۔محکمہ صحت کے مطابق صوبے میں کورونا کے کیسز کی مجموعی تعداد 5678 اور ہلاکتیں 291 ہوگئی۔محکمہ صحت نے بتایا پشاور میں 4، مردان 2 اور صوابی میں ایک ہلاکت ہوئی۔محکمہ صحت کے مطابق مزید 108 افراد کورونا سے صحتیاب ہوئے جس کے بعد صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 1613 ہوگئی۔بلوچستان حکومت کی جانب سے جمعے کو کورونا کے اعداد و شمار جاری نہیں کیے گئے البتہ جمعرات کو کورونا وائرس کے مزید 152 کیسز اور 3 اموات سامنے آئیں تھیں کی تصدیق صوبائی کورونا پورٹل پر کی گئی۔صوبے میں کورونا کے مریضوں کی مجموعی تعداد 2310 ہوگئی ہے جبکہ صوبے میں ہلاکتوں کی تعداد 30 تک پہنچ گئی ہے۔بلوچستان میں اب تک 342 مریض کورونا وائرس سے صحتیاب ہوچکے ہیں۔پنجاب میں جمعے کو کورونا کے مزید 11 مریض جاں بحق ہوگئے جس کے بعد انتقال کرجانیوالوں کی مجموعی تعداد 245 ہوگئی۔

پاکستان کورونا

بیجنگ،ہنوئی، انقرہ (مانیٹرنگ ڈیسک)جانز ہوپکنز یونیورسٹی کے سسٹمز سائنس وانجینئرنگ کے مرکز نے دنیا بھر میں نوول کرونا وائرس سے زیادہ متاثرہ ممالک میں مصدقہ کیسز کے تازہ ترین اعدادوشمار جاری کئے ہیں،جن کے مطابق پوری دنیا میں نوول کرونا وائرس کے مصدقہ کیسز کی تعداد46لاکھ2ہزار793تک پہنچ گئی،جبکہ اموات کی تعداد3لاکھ 7ہزار سے زائد ہو گئی۔ امریکہ 14لاکھ74ہزار889مصدقہ کیسز کیساتھ سرفہرست ہے، جبکہ وہاں گزشتہ روز بھی1170 اموات ہوئیں،روس 2لاکھ 62ہزار 245 مصدقہ کیسز کیساتھ دوسرے،برطانیہ 2لاکھ 37ہزار 440 مصدقہ کیسز کے ساتھ تیسرے نمبر پرہے۔ روس میں گزشتہ روز130،برطانیہ میں 380 ہلاکتیں ہوئیں،سپین میں 2لاکھ74ہزار540مصدقہ کیسز ہیں،وہاں گزشتہ روز145اموات ہوئیں، اٹلی میں 2لاکھ23ہزار96مصدقہ کیسز اور 249اموات، برازیل میں مصدقہ کیسز کی تعداد 2لاکھ 7ہزار 165جبکہ 470اموات، فرانس میں مصدقہ کیسز کی تعداد 1لاکھ78ہزار994تک پہنچ گئی جبکہ 111اموات، جرمنی میں مصدقہ کیسز کی تعداد1لاکھ75ہزار478اور 30اموات ہوئیں، ترکی میں 1لاکھ44 ہزار 749مصدقہ کیسز تک پہنچ گئی جبکہ گزشتہ روز وہاں 48افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔چین میں مصدقہ کیسز کی تعداد84ہزار469ہو گئی۔ادھر کم وسائل کے باوجود منظم طریقے اور حکمت عملی کیساتھ کورونا وائرس کی وبا کا مقابلہ کرنیوالے جنوب مشرقی ایشیائی ملک ویتنام میں کورونا کے باعث نافذ کیے گئے جزوی لاک ڈاؤن کو اگرچہ اپریل کے وسط میں ہی مزید آسان کردیا گیا تھا مگر مئی کے وسط میں تقریبا 75فیصد کاروبار اور معمولات زندگی بحال کردی گئیں۔ویتنام میں 15مئی کی صبح تک کورونا کے باعث ایک بھی ہلاکت رپورٹ نہیں ہوئی تھی اور وہاں مریضوں کی تعداد 312 تک جا پہنچی تھیں۔ویتنام میں کورونا کا پہلا کیس جنوری 2020 کے آخر میں سامنے آیا تھا اور وہاں کی حکومت نے پہلا کیس آنے کے بعد ہی وبا سے بچاؤ کے اقداما ت اٹھانا شروع کردیے تھے۔چین، جنوبی کوریا اور دیگر یورپی و ایشیائی ممالک کے مقابلے کم آمدنی والے اس ملک نے محدود وسائل کے باوجود کورونا کیخلاف کامیاب حکمت عملی بناکر نہ صرف وہاں ہلاکتوں کو روکا بلکہ بیماری کو پھیلنے سے بھی روکنے میں کامیاب رہا۔ویتنام کی آبادی 10 کروڑ کے قریب ہے اور اس ملک کی کورونا کے مرکز سمجھے جانیوالے ملک چین سے ایک ہزار کلو میٹر سے طویل زمینی سرحد بھی ملتی ہے جبکہ ویتنام کے دیگر پڑوسی ممالک میں بھی کورونا کی وبا میں تیزی دیکھی گئی اور وہاں ہلاکتیں بھی ہوئیں۔دوسری طرف ترکی کی وزارت صحت نے کہاہے کہ ملک میں کرونا وبا سے ہونیوالی ہلاکتیں چار ہزار سے تجاوز کرگئیں۔ حکومت نے کرونا سے ہلاکتوں میں اضافے کے بعد ملک بھر میں چار روز کیلئے مکمل لاک ڈاون کا اعلان کیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ترک وزارت صحت کی طرف سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا کہ گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک بھرمیں کرونا سے مزید 55 ہلاکتیں ہوئیں جس کے بعد اب تک کرونا سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد چار ہزار سات ہوگئی ہے۔بیان میں کہا گیا کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کرونا کے مزید 1635 کیس سامنے آئے۔ ترکی میں چھبیس اپریل کے بعد کرونا سے اموات میں نسبتا کمی آئی ہے۔ گذشتہ دونوں ترکی میں کرونا سے اوسطا یومیہ ایک سو کے قریب اموات ہوتی رہی ہیں۔6 مئی کو ترک وزیر صحت فخرالدین قوجہ نے دعویٰ کیا تھا کہ حکومت نے کرونا کی وبا پر تقریبا قابو پالیا ہے۔ سخت شرائط کے تحت سماجی سرگرمیوں کی بحالی کی اجازت دی جا رہی ہے۔ترکی نے حفاظتی اقدامات میں تیزی لائی ہے۔ کرونا وبا پھیلنے کے بعد اسکول بند کردیئے گئے۔ ثقافتی اور کھیلوں کی سرگرمیاں معطل ہیں اور ہفتہ وار تعطیلات میں لاک ڈاؤن کیا جا رہا ہے۔استنبول اور انقرہ جیسے گنجان آباد شہروں سمیت 30 بڑے شہروں میں چار روز کے لیے مکمل لاک ڈاون کا اعلان کیا گیا ہے۔

کورونا دنیا

مزید :

صفحہ اول -