بیوی نے آشنا سے ملکر شوہر مار ڈالا‘ پولیس کا مقدمہ درج کرنے سے انکار

بیوی نے آشنا سے ملکر شوہر مار ڈالا‘ پولیس کا مقدمہ درج کرنے سے انکار

  

شجاع آباد (نمائندہ خصوصی)بیوی نے آشنا کے ساتھ مل کر اپنے شوہر کو نشہ آور گولیاں کھلا کر زہریلا انجکشن لگانے سے ہلاکت پر تھانہ صدر پولیس شجاع آباد کا مقدمہ درج نہ کرنے پر موضع پنجانی کے رہائشیوں مرد خواتین نے تھانہ چوک شجاع آباد میں پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ٹائر جلا کر روڈ بلاک کر دیا گیا ایس ایچ او صدر کے خلاف شدید نعرے بازی کی اس موقع پر ایس ایچ او تھانہ سٹی بھی پہنچ گئے بعد ازاں اے ایس پی سنگھار ملک سے مذاکرات (بقیہ نمبر41صفحہ6پر)

ہوئے جس پراے ایس پی نے مظاہرین کو یقین دہانی کرائی کہ 23-5کو مقدمہ درج ہو جائے گا مظاہرین نے صحافیوں کو بتایا کہ ساجدہ بی بی کچھ سال قبل عبداللہ کھوکھرسے نا تعلقات استوار کر کے بھاگ گئی تھی بعد ازاں برادری نے ساجدہ کو واپس کرا کر اس کا نکاح اس کے کزن محمد اظہر کھوکھرسے کردیا گیا جس سے ایک بچی پیدا ہوئی ساجدہ بی بی نے اپنے آشنا عبداللہ کھوکھر سے تعلقات جاری رکھے ساجدہ بی بی اور اس کے آشنا عبداللہ کھوکھر نے محمد اظہر کو راستہ سے ہٹانے کیلئے صلاح مشورہ کرکے کر زہریلی گولیاں کھلا کر زہریلا انجکشن لگا دیا جس سے محمد اظہرکھوکھر ہلاک ہو گیا نمازجنازہ کی ادائیگی کے بعد جب مقتول محمد اظہر کو سپرد خاک کیا جانے لگا تو مقتول کی انجکشن لگنے والی جگہ پھٹ گئی جس سے لواحقین کو تفتیش لاحق ہوئی محمد اظہرکو سپرد خاک کرنے کے بعد جب ساجدہ بی بی کو ڈرا دھمکیاں تو ساجدہ بی بی نے سچ اگل دیا اور ساجدہ بی بی اور اس کے آشنا عبداللہ کھوکھر کو تھانہ صدر پولیس کے حوالے کیاگیا تا حال ساجدہ بی بی اور عبداللہ کھوکھر پولیس کی حراست میں ہیں عوام کے روبرو اور پولیس کے روبرو اپنا جرم تسلیم کر چکے ہیں جرم تسلیم کرنے کے باوجود تھانہ صدر پولیس ملزمان کے خلاف مقدمہ درج نہیں کررہی ہیمظاہرین نے الزام عائد کیا ہے کہ تھانہ صدر شجاع آباد کا ایس ایچ او ملزمان سے ساز باز ہو گیا ہے جس کی وجہ سے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرنے سے لیت ولعل سے کام لے رہا ہے اس ضمن میں ایس ایچ او تھانہ صدر حاجی لیاقت سے موقف لیا گیا جنہوں نے کہا ہم رپٹ درج کر لی ہے قبر کشائی پوسٹمارٹم رپورٹ کے بعد ہی مقدمہ درج کیا جائے گا

انکار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -