نشتر: پائینز یونٹی کا اجلاس‘ کرونا کیخلاف بنائی جانیوالی پالیسیوں پر کڑی تنقید

  نشتر: پائینز یونٹی کا اجلاس‘ کرونا کیخلاف بنائی جانیوالی پالیسیوں پر کڑی ...

  

ملتان(نمائندہ خصوصی)وزیر اعلی عثمان بزدار کی جانب سے کورونا کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن سولجرز طبی عملی کو اپریل کے مہینے سے وباء کے خاتمے تک ڈبل تنخواہ کی وعید سنائی گئی، اپریل بھی گزر گیا اور بجائے ڈبل(بقیہ نمبر24صفحہ6پر)

تنخواہ کے دو دن کی تنخواہ کاٹ لی گئی جب احتجاج ہوا تو کہا گیا کہ یہ دو دن کی تنخواہ واپس کردی جائے گی، پھر ڈبل تنخواہ کا نوٹیفیکیشن جاری ہوتا ہے جس کے مطابق کورونا کا شکار ہونے والے ڈاکٹرز سمیت دیگر ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈیکل سٹاف کو اس میں شامل نہیں کیاجاتا اور اتنا سخت طریقہ رکھا جاتا ہے جس کے مطابق صرف چند ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈیکل سٹاف کو ہی وہ تنخواہ مل سکتی ہے،اس حوالے سے پائینرز یونٹی کا اجلاس پروفیسر ڈاکٹر شاہد راؤ کی صدارت میں نشتر ہسپتال میں ہوا جس میں کورونا کے خلاف بنائی جانے والی حکومتی پالیسیوں کو آڑے ہاتھوں لیا گیا اور شدید تحفظات کا اظہار کیا گیا، اس موقع پر ڈاکٹر شاہد راو کا کہنا تھا کہ حکومتی غلط پالیسیوں کی وجہ سے کورونا کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں دوسری جانب حکومت ڈبل شاہ کی طرح فراڈ بند کرے اس طرح کے ڈرامے طبی عملے کو ریلیف دینے کی بجائے تکلیف دے رہے ہیں،ہسپتالوں میں کام کرنے والے تمام طبی عملے کو ڈبل تنخواہ دی جائے جس طرح ایوان صدر کے ملازمین، واپڈا، وکلاء اور دیگر اداروں کیلئے اعلانات کئے گئے ہیں،اگر ایسا نہیں کرتے تو پھر اپنی ڈبل تنخواہ اپنیپاس رکھیں ہم دکھی انسانیت کی خدمت ویسے بھی جاری رکھیں گے اس موقع پر اجلاس میں کورونا سے صحت یاب ہونے والے طبی عملے کے ڈاکٹرز نے بھی شرکت کی جن کو ڈبل تنخواہ کے معاملے پر یکسر نظر انداز کیا گیا ہے۔

فیصلہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -