ملتان: اسسٹنٹ کمشنرز ان ایکشن‘ چھوٹے دکانداروں کو ٹارگٹ کرنیکا انکشاف

  ملتان: اسسٹنٹ کمشنرز ان ایکشن‘ چھوٹے دکانداروں کو ٹارگٹ کرنیکا انکشاف

  

ملتان (خصو صی رپورٹر) اسسٹنٹ کمشنرز کی کارروائیاں چھوٹے دوکانداروں تک محدود ہوگئیں ریڑی بان اور چھوٹے تاجروں کی گرفتاریوں کا سلسلہ تیز ہوگیا،ضلع کچہری ملتان میں کورونا ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر دی گئیں۔ بغیر احتیاطی تدابیر اپنائے ہتھکڑیوں میں جکڑے بیسیویں ملزمان کو عدالتی احاطوں میں اکھٹے لاکھڑا کر دیا گیا تفصیل کے مطابق حکومت (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

پنجاب کی جانب سے ضلعی حکومتوں کو کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے بنائے گئی ایس او پیز پر عمل کرانے کے لیے ٹیمیں تشکیل دینے کے احکامات جاری کیے گئے،ضلعی انتظامیہ ملتان کی جانب سے بھی اسسٹنٹ کمشنر سٹی عابدہ فرید اور اسسٹنٹ کمشنر صدر شہزاد محبوب کی سربراہی میں حکومتی احکامات پر عمل کرانے کے لیے ٹیمیں تشکیل دی گئیں،جن کا کام لاک ڈاون دفعہ 144 اور سماجی فاصلہ یقینی بنانے اور دیگر ایس او پیز پر عمل کرانا تھا،مگر ملتان میں صورتحال اس کے برعکس ہے،اسسٹنٹ کمشنر سٹی عابدہ فرید اور دیگر افسران پر مشتمل ٹیموں کی کارروائی صرف چھوٹے تاجروں اور ریڑہی بانوں تک ہی محدود ہے جبکہ بازاروں اور دیگر مقامات پر کھلے عام ایس او پیز کی خلاف ورزی دیکھنے میں ائی، بازاروں میں کارروائی جاری جبکہ عدالتوں میں ملزمان میں سماجی فاصلہ رکھوانے کے حکومتی احکامات انتظامیہ اور پولیس حکام نے ہوا میں اڑا دیے۔مختلف مقدمات میں ملوث ملزمان کو ایک ساتھ ضلع کچہری لانے کا سلسلہ گزشتہ روز بھی جاری رہا۔کئی مقدمات میں ملوث ملزمان کے ورثاء بھی بڑی تعداد میں کچہری پہنچ گئے۔ملک بھر میں کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے اعلیٰ حکام نے ملک کے کئی شہروں میں لاک ڈاؤن اور ڈبل سواری پر پابندی کے احکامات دے رکھے تھے اور عدالتوں میں بھی صرف اہم مقدمات کی سماعت کی جارہی ہے۔لیکن پولیس کی جانب سے درج کیے جانے والے مختلف مقدمات میں گرفتار ملزمان کو عدالتوں میں پیش کیا جاتا ہے اس عمل کے دوران پولیس کی جانب سے صوبائی حکومت کے احکامات کی خلاف ورزی دیکھنے میں نظر آئی ہے۔ پولیس گرفتار ملزمان کو ایک ساتھ اور بغیر احتیاطی تدابیر اپنائے ہتھکڑیوں میں پیش کررہی ہے۔ ضلع کچہری میں ایک طرف تو ملزمان کا رش اور دوسری جانب ملزمان کے ورثاء کی بھی بڑی تعداد کچہری آرہی ہے جس کے باعث کوروناوائرس کے پھیلنے کا خدشہ خطرناک حد تک بڑھ گیا ہے۔ جس ہر انتظامیہ خاموش دکھائی دیتی ہے،وکلاء کا کہنا ہے کہ ایسی سنگین صورتحال میں ہر شہری کی ذمہ داری ہے کہ وہ سماجی فاصلہ کو خیال کریں اور حکومتی احکامات پر عمل کریں، اس کے ساتھ ساتھ انتظامیہ اور پولیس کو بھی اس سنگین معاملہ میں اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ وکلاء نے مطالبہ کیا کہ انتظامیہ اور پولیس مل کر اس بات کو یقینی بنائے کہ کسی بھی مقام پر شہریوں کا رش نا ہو۔

ٹارگٹ

.

مزید :

ملتان صفحہ آخر -