حکمرا ن عوامی مسائل کے حل کیلئے سنجیدہ نہیں: محمد حسین محنتی

    حکمرا ن عوامی مسائل کے حل کیلئے سنجیدہ نہیں: محمد حسین محنتی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی سندھ کے امیر وسابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ حکمران عوامی مسائل کے حل کیلئے سنجیدہ نہیں ہیں، صوبائی اور وفاقی حکومت کی نوراکشتی ”لڑاؤ اور حکومت کرو“ کی سابقہ پالیسی کا تسلسل ہے، کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے حکومتی ٹیسٹ،اموات کے اعداد وشمار میں تضادات شکوک وشبہات کا باعث بن رہے ہیں، جماعت اسلامی مظلوم عوام کی ترجمان بن کر عوامی مسائل کو اجاگر اور ان کے حل کیلئے اپنی کوششیں جاری رکھے گی،ذمہ داران تقویٰ ودین داری کی اسپرٹ کو آگے بڑھائیں کیونکہ جب تک اخلاص وجذبہ نہیں ہوگا اس وقت تک کوئی بھی تحریک نتیجہ خیز ثابت نہیں ہوسکتی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباء آڈیٹوریم میں وڈیو لنک کے ذریعے سندھ بھر کے ضلعی امراء کے اجلاس سے خطاب کے دوران کیا، قیم صوبہ کاشف سعید شیخ، نائب امراء عبدالغفار عمر، حافظ نصراللہ عزیز، نائب قیم محمد مسلم اور سیکریٹری اطلاعات مجاہد چنا بھی اس موقع پر موجود تھے۔محمد حسین محنتی نے مزید کہا کہ سندھ کے عوام مہنگائی،بیروزگاری،صحت وتعلیم اور صاف پانی جیسی بنیادی ضروریات سمیت بے شمار مسائل کا شکار ہیں،کورونا اور لاک ڈاؤن کی صورتحال نے عام آدمی کے مسائل میں مزید اضافہ کردیا ہے مگر دوسری جانب وفاقی اور صوبائی حکومتیں عوام کے مسائل کو حل کرنے کیلئے سنجیدہ اقدامات کرکے ریلیف دینے کی بجائے ایک دوسرے کیخلاف بیان بازی میں مصروف ہیں۔ صوبائی امیر نے ضلعی ذمہ داران پر زور دیا کہ حالات چاہے جیسے بھی ہوں وہ تنظیمی اسپرٹ کو آگے بڑھانے کیلئے اپنی کوششیں جاری رکھیں کیونکہ نہیں معلوم کہ کورونا کی وبا کب ختم ہوگی،اسلئے کورونا کے ساتھ ساتھ زندہ رہنا سیکھنا پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ 27رمضان المبارک کو یومِ پاکستان اور نزول قرآن کے احتیاطی تدابیر کے ساتھ پروگرامات کئے جائیں۔#

مزید :

صفحہ اول -