عوام اور تاجر برادری کواحتیاطی تدابیر اپنانی ہو ں گی: تیمور جھگڑا

  عوام اور تاجر برادری کواحتیاطی تدابیر اپنانی ہو ں گی: تیمور جھگڑا

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا نے کہا ہے کہ اقتصادی و معاشی صورتحال اور عوام کی مشکلات کو مدنظر رکھتے ہوئے لاک ڈاؤن میں نرمی کی گئی ہے۔ تاہم نہ صرف صوبائی حکومت بلکہ وفاقی سطح پر بھی موجودہ صورت حال کا بغور جائزہ لیا جا رہا ہے۔ اس تمام تر صورتحال میں احتیاط انتہائی ضروری ہے جس کی ذمہ داری تاجر برادری کے ساتھ ساتھ عوام الناس پر بھی عائد ہوتی ہے۔ اس وقت سب سے ضروری عمل عوام کو کورونا وائرس ا اور اس سے بچاؤ کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کے حوالے سے آگاہی فراہم کرنا ہے۔ ہمیں اس صورتحال میں اس بات کا بھی سوچنا ہے کہ ایسا نہ ہوکہ دکانیں اور کاروبار کھولنے کی قیمت کاروبار بند کرنے کے نقصان سے زیادہ نہ ہو جائے۔ ہفتے میں میں تین دن جمعہ ہفتہ اور اتوار کاروبار بند رکھا جائے گا۔ اس وباء میں ایک چھوٹے سے طبقے حتیٰ کے ایک شخص کی غیر ذمہ داری کا خمیازہ درجنوں لوگوں کو بھگتنا پڑ سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو اپنے روایتی طور طریقے اور انداز بدلنے ہوں گے۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق اور ملک میں کورونا کے پھیلاؤ کو دیکھتے ہوئے یہ اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ ہمیں اس وائرس کے ساتھ رہنا پڑے گا۔ تیمور جھگڑا نے کہا کہ محکمہ صحت دیگر بیماریوں پر بھی توجہ دے رہا ہے جس میں بچوں کی ویکسینیشن اور ڈینگی بھی شامل ہیں تاکہ عوام کو ان سے بھی بچایا جا سکے۔ تیمور جھگڑا نے اس ضمن میں ایس او پیز پر عمل درآمد نہ ہونے اور کیسز بڑھنے کی صورت میں لاک ڈاؤن پھر نافذ کرنے کا عندیہ بھی دیا۔

مزید :

صفحہ اول -