کورونا از خود نوٹس،وفاق اور پنجاب حکومت نے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی

کورونا از خود نوٹس،وفاق اور پنجاب حکومت نے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی
کورونا از خود نوٹس،وفاق اور پنجاب حکومت نے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)کورونا از خود نوٹس کیس میں وفاقی اور پنجاب حکومت نے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی۔

میڈیارپورٹس کے مطابق کوروناازخودنوٹس کیس میں وفاقی حکومت نے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی،رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ قومی رابطہ کمیٹی اجلاس میں تعمیراتی سیکٹرکے فیزٹوکوکھولنے کافیصلہ کیاگیا جبکہ شاپنگ مالز،شادی ہالز،سمیت متعددجگہوں کو31مئی تک بندرکھنے کافیصلہ کیاگیا،رپورٹ میں مزید کہاگیا ہے کہ عوام کی سہولت کیلئے چھوٹے تجارتی مراکزکھولنے کی اجازت دی۔

پنجاب حکومت نے بھی کورونا ازخودنوٹس کیس میں رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی،پنجاب حکومت کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ زکوةٰ فنڈ میں کوئی غبن اور فراڈ نہیں ہوا،آڈیٹر جنرل کی جانب سے فنڈ کی تقسیم میں قواعد کی خلاف ورزی کے اعتراضات لگائے گئے، آڈیٹر جنرل کے اعتراضات میں چوری یا غبن کا کوئی الزام نہیں۔

رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ صحت اور امن سے متعلق قانون سازی کرنا صوبوں کا اختیار ہے ، وفاقی حکومت نے صوبوں کو لاک ڈاون سے متعلق فیصلہ سازی کا اختیار دیا، پنجاب میں کاروباری سرگرمیاں معطل کرنے میں وفاقی کی ہدایت شامل تھی۔

رپورٹ میں مزید کہاگیا ہے کہ آرٹیکل 143، 149 کے تحت صوبے وفاقی حکومت کی ہدایت کی تعمیل کے پابند ہیں ، لاک ڈاون عوام کی صحت کیلئے ضروری تھا،لاک ڈاون سے وفاقی ٹیکس متاثر ہوسکتا ہے، وفاقی حکومت اور صوبوں کا لاک ڈاون پر کوئی اختلاف نہیں۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -