کورونا کے بد ترین وار سہنے والے ملک نے بین الاقوامی سفر کی اجازت دے دی

کورونا کے بد ترین وار سہنے والے ملک نے بین الاقوامی سفر کی اجازت دے دی
کورونا کے بد ترین وار سہنے والے ملک نے بین الاقوامی سفر کی اجازت دے دی

  

روم(ڈیلی پاکستان آن لائن) کورونا وائرس کے بدترین وار سہنے والے یورپی ملک اٹلی نے  تین جون سے بین الاقوامی سفر کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

اطالوی حکومت کی جانب سے ملک میں دنیا کے سخت ترین لاک ڈاون میں سے ایک لگایا گیاتھا۔

برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق حکومت اسی روز سے ملک بھر میں بھی آزاد سفر کی اجازت دے گی۔کچھ علاقوں میں تیزی سے لاک ڈاؤن کے خاتمے پر زور دیا گیا تھا لیکن اطالوی وزیراعظم نے کورونا وائرس کی دوسری لہر کو روکنے کے لیے معمولات کو مرحلہ وار بحال کرنے پر اصرار کیا تھا۔

ڈان نیوز کے مطابق  اٹلی میں 21 فروری کو وبا کا پھیلاؤ منظر عام پر آنے کے بعد سے اب تک 31 ہزار 600 افراد کووِڈ 19 کی وجہ سے ہلاک ہوچکے ہیں جو دنیا میں امریکا اور برطانیہ کے بعد ہلاکتوں کی تیسری بڑی تعداد ہے۔اس یورپی ملک میں مجموعی طور پر وائرس سے 2 لاکھ 23 ہزار 885 افراد متاثر ہوئے جبکہ 31 ہزار 610 صحتیاب ہوچکے ہیں۔

اس معتدی بیماری کو روکنے کے لیے اٹلی پہلا یورپی ملک تھا جہاں پورے ملک میں لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا مارچ میں لگائی گئی پابندیوں میں 4 مئی کو کچھ نرمیوں کا اعلان کیا گیا اور صنعتیں اور پارکس کھولنے کی اجازت دی گئی۔

https://dailypakistan.com.pk/23-May-2020/1136340

علاوہ دکانیں 18 مئی سے کھولنے کی اجازت دی گئی اور حکومت نے فیصلہ کیا تھا اسی روز تمام علاقوں میں ہر طرح کی نقل و حرکت کی اجازت دے دی جائے گی مطلب لوگ اپنے دوستوں سے ملنے جاسکیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -