مقبوضہ جموں وکشمیر،سرجان برکاتی سمیت تین درجن کے قریب نوجوان گرفتار

  مقبوضہ جموں وکشمیر،سرجان برکاتی سمیت تین درجن کے قریب نوجوان گرفتار

  

سرینگر (این این آئی) بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں وکشمیر میں بھارتی پولیس نے سرینگر، پلوامہ، کولگام اور شوپیاں اضلاع سے معروف حریت رہنما مولانا سرجان برکاتی سمیت تین درجن کے قریب نوجوان گرفتار کر لیے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس نے اسرائیل اور بھارت کے خلاف مظاہروں کی پاداش میں سرینگر کے بادشاہی باغ اور دیگر علاقوں سے 28نوجوان گرفتار کر لیے۔ سرجان برکاتی کو ضلع شوپیاں میں اپنے گھر سے گرفتار کیا گیا۔ انہیں عید الفطر کے روز اپنے علاقے میں ایک تقریر کے بعد گرفتار کیا گیا۔کل جماعتی حریت کانفرنس کے انسانی حقوق امور کے سیکرٹری ارشد عزیز نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل پر زور دیا کہ وہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں نسل کشی رکوانے کیلئے فوری مداخلت کرے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے بنیادی حقوق سلب کر لئے گئے ہیں اور وہ بدترین بھارتی محاصرے کے دوران مصائب و مشکلات کی زندگی گزار رہے ہیں۔حریت رہنماں غلام محمد خان سوپوری، خواجہ فردوس، عبدالصمد انقلابی اور غازی منظور احمد نے اپنے بیانات میں عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ اسرائیل اور بھارت کو فلسطینیوں اور کشمیریوں کے قتل عام سے روکے۔ 

  جموں کشمیر

مزید :

صفحہ آخر -