ایس او پیز کے تحت مرحلہ وار مارکیٹیں کھول دی جائیں:غلام بلاول

ایس او پیز کے تحت مرحلہ وار مارکیٹیں کھول دی جائیں:غلام بلاول

  

 پشاور (سٹی رپورٹر) ٹریدرز الائنس فیڈریشن پشاور کے صدر و صوبائی چیر مین نیشنل پیس کونسل پاکستان غلام بلال نے خیبر پختونخوا کے وزیر اعلی محمود خان سے ''قوانین پر سختی سے عمل درآمد'' کے ساتھ مرحلہ وار لاک ڈاؤن اور مارکیٹوں کو کھولنے کی درخواست کی ہے۔  ہم ایک ہفتے تک لاک ڈاؤن میں کسی بھی توسیع کو قبول نہیں کرسکتے ہیں۔  اتوار (16 مئی) کو پشاور میں مکمل شٹر ڈاؤن ختم ہونا چاہیے یڈرز الائننس کے صدر اور ایکزکٹو  ممبر سرحد چیمبر پشاور غلام بلال جاوید نے کہا کہ شروع سے ہی ہم لاک ڈاؤن کے حق میں نہیں تھے۔  انہوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کے معاملات میں اضافہ ہونے کے بعد ان کے پاس کوئی آپشن نہیں تھا۔ تاہم اب ہماری رائے ہے کہ حکومت کو لاک ڈاؤن میں توسیع کرنے کے بجائے قوانین پر سختی سے عمل درآمد اور مناسب طور پر سینیٹائزیشن کے ساتھ بازاروں کو مرحلہ وار کھولنا چاہئے، تاجر، جو ''تمام مشکل وقتوں '' میں قوم کے ساتھ کھڑے ہیں اب انہیں حکومت کی طرف سے حمایت کی اشد ضرورت ہے اور دعویٰ کیا گیا ہے کہ حکومت کو لکھے گئے خطوط بھی کام ننہ آئے لیکن   ''تاجروں کو آج تک کسی بھی شکل میں کوئی ریلیف نہیں دیا گیا ہے۔ ہمیں حکومت کی حمایت کے بغیر اپنے ملازمین کی تنخواہیں، کرایہ، ادائیگی، پراپرٹی ٹیکس، قرض کی ادائیگی، جی ایس ٹی بروقت ادا کرنا پڑتا ہے۔ زیادہ سے زیادہ تاجروں کو مشکل پیش آرہی ہے زندہ رہنے کے لئے  میں نے حکومت کو کم از کم 150 خط لکھے ہیں جن میں تاجر برادری کی مدد کی درخواست کی ہے، لیکن ابھی تک ایک بھی جواب موصول نہیں ہوسکا،انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ اگر مزید توسیع ہوئی تو اس وجہ سے دکاندار اپنے کرایے بھی ادا نہیں کرسکیں گے اور ہزاروں کارکن اپنی ملازمت سے محروم ہوجائیں گے، لہذا حکومت کو صورتحال کی سنگینی کا احساس کرنا چاہئے اور کاروباری سرگرمیاں بغیر کسی پابندی کے جاری رکھنے کی اجازت دی جائے اور آئندہ اس وباء سے مقابلے کیلے بغیر کاروباری سرگرمیاں بند کئے ہوئے ایسے اقدامات بروئے کار لائے جائیں کہ تاجر برادری مزید نقصانات سے بچ جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -