جنسی زیادتی اور قتل کے الزام میں گرفتار سابق پولیس افسر کے گھر سے اتنی لاشیں برآمد کہ کوئی بھی گھبراجائے

جنسی زیادتی اور قتل کے الزام میں گرفتار سابق پولیس افسر کے گھر سے اتنی لاشیں ...
 جنسی زیادتی اور قتل کے الزام میں گرفتار سابق پولیس افسر کے گھر سے اتنی لاشیں برآمد کہ کوئی بھی گھبراجائے

  

سان سلواڈور (ویب ڈیسک)  وسطی امریکی ملک ایل سیلواڈور میں جنسی زیادتی اور قتل کے الزام میں گرفتار سابق پولیس افسر کے گھر سے سات  خواتین اور تین  بچوں کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔ 

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق  ایل سیلواڈور میں 51 سالہ سابق پولیس افسر ہیگو اوسیریو چاویز کو  خاتون اور ان کے بیٹے قتل کے الزام میں حراست میں لیا گیا تھا۔ دوران تفتیش ملزم نے ہوشربا انکشافات کیے جن کی بنیاد پر پولیس افسر کی گھر کی تلاشی لی گئی۔سابق پولیس افسر کے گھر کے لان میں دفن کی گئیں 10 افراد کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں،  زیادہ تر لاشیں دو سال پرانی ہیں، ملزم کو قتل اور جنسی زیادتی کے 13 مقدمات کا سامنا ہے۔

پولیس نے اپنے سابق افسر کو ایک خاتون کی شکایت پر گھر سے گرفتار کیا۔ خاتون نے پولیس کو کال کرکے بتایا تھا کہ برابر والے گھر سے ایک خاتون کی درد سے چیخنے اور مدد مانگنے کی آوازیں آرہی ہیں تاہم جب پولیس پہنچی تو 56 سالہ خاتون اور ان کی 26 سالہ بیٹی کی لاشیں سوئمنگ پول سے ملیں۔بتایا گیا ہے کہ سابق پولیس افسر ایک جنسی مریض ہے جسے ڈیوٹی کے دوران جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزام میں ملازمت سے برطرف کردیا گیا تھا اور اس نے جیل قید کی سزا بھی کاٹی تھی۔

مزید :

بین الاقوامی -