ریلوے کالونیوں کو بجلی کی ترسیل کا معاملہ لیسکو کے سپرد کرنیکا فیصلہ

ریلوے کالونیوں کو بجلی کی ترسیل کا معاملہ لیسکو کے سپرد کرنیکا فیصلہ ...

  

                                                         لاہور(حنیف خان)بجلی چوری میں اضافے اور بڑھتے ہوئے لائن لاسز سے دلبرداشتہ ہوکرریلوے نے اپنی کالونیوں میں بجلی کی تقسیم سے انکار کردیا ہے بلوں کی ریکوریاں نہ ہونے کے باعث ریلوے کو سالانہ کروڑوں روپے کا خسارہ برداشت کرنا پڑ رہا تھا جس کے باعث ریلوے انتظامیہ نے بجلی کی تقسیم سے ہاتھ کھڑے کر دیئے ہیں دوسری جانب لیسکو نے بھی براہ راست ریلوے کالونیوں کو بجلی کی فراہمی سے معذوری ظاہر کر دی ہے ۔ اس صورتحال میں نجی کمپنیوں کو بذریعہ ٹینڈر آگے لایا گیا ہے کہ وہ لیسکو سے بجلی خرید کر ریلوے کالونیوں کو فراہم کریںگی اس ضمن میں بذریعہ ٹینڈر بجلی کی ترسیل و تقسیم کا نظام نجی کمپنیوں کو دینے کا عمل آخری مرحلے میں داخل ہوگیا ہے ریلوے نے ایک ٹینڈر کیا ہے جس میں کمپنیوں کو دعوت دی گئی کہ وہ ریلوے فیض باغ کالونی،وائرلیس کالونی اور گوشت مارکیٹ کالونی جی ٹی روڈ کی بجلی کی سپلائی کے لئے ذمہ داری لیں اس پیشکش کے بعد تین کمپنیوں نے حصہ لیا جن میں پاور کمپنی ،پاور سسٹم انجینئرنگ کنسلٹنٹ اور شیلٹر بلڈر شامل تھی اس دوران پاور سسٹم انجینئرنگ کنسلٹنٹ نے ریلوے کی مذکورہ تین کالونیوں کو بجلی کی فراہمی کا ٹھیکہ حاصل کر لیا ہے ، مذکورہ کمپنی لیسکو حکام سے رابطے کے بعد آئندہ ہفتے بلک میں بجلی کے حصول کیلئے 80لاکھ روپے کا ڈیمانڈ نوٹس بنوایا ہے یہ بجلی فیض باغ کالونی،وائرلیس کالونی اور گوشت مارکیٹ کالونی جی ٹی روڈکے نجی کمپنی کے ذریعے دی جائے گی بجلی کی تقسیم کے اس معاہدے کے تحت ریلوے افسروں کی رہائشی کالونی میوگارڈن ،ملازمین کی رہائشی کالونی وحید کالونی ،سروے کالونی ،باجہ لائن پاور ہاﺅس سمیت دیگر کالونیوں کی بجلی کا کنٹرول پرائیویٹ کمپنی کے سپرد ہو جائے گااس حوالے سے ریلوے ذرائع نے بتایا کہ ریلوے عرصہ دراز سے رہائشی کالونیوں کو بجلی سپلائی کررہی تھی مگر اس کام میں ریلوے کو سالانہ 2 دوکروڑروپے سے زائد کا نقصان برداشت کرنا پڑرہا ہے جس کے باعث ریلوے نے لیسکو سے براہ راست رابطہ کیا کہ وہ ریلوے کالونیوں میں بجلی کی سپلائی خود کریں اور صارفین سے براہ راست بل بھی وصول کرے مگر لیسکو نے بھی یہ معاملہ اپنے سپرد لینے سے انکار کر دیا ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -