ایس آر او 608 تاجروں پر لٹکتی ہوئی تلوار ہے‘ تاجر قبول نہیں کرینگے ،شاہین احسان مغل

ایس آر او 608 تاجروں پر لٹکتی ہوئی تلوار ہے‘ تاجر قبول نہیں کرینگے ،شاہین ...

  

سرگودھا (آن لائن) ایس آر او 608 تاجروں پر لٹکتی ہوئی تلوار ہے جسے تاجر قبول نہیں کرینگے حکومت بیورو کریسی کی بجائے تاجروں کی تجاویز کو مد نظر رکھتے ہوئے ٹیکس پالیسیاں مرتب کرے تو ٹیکس کا ریٹرن حکومت کی توقع سے زیادہ ہوگا بدقسمتی سے پاکستان میں بیورو کریسی نے ہمیشہ ملکی ترقی میں رکاوٹیں پیدا کی ہیں جس کی وجہ سے ملک دن بدن تنزلی کی طرف جارہا ہے بیورو کریسی کی بڑی تعداد اپنے مفادات کو مد نظر رکھتے ہوئے پالیسیاں بناتی ہیں ان خیالات کا اظہار آل پاکستان سمال ٹریڈرز بزنس فورم کے مرکزی وائس چیئرمین شاہین احسان مغل نے تاجروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ایس آر او 608 حکومت فوری طور پر واپس لیکر تاجروں کا مطالبہ پورا کرے وگرنہ تاجر ہر قسم کا اقدام اٹھانے پر مجبور ہوجائینگے انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تاجروں کا وفد کمشنر انکم ٹیکس سرگودھا سے بھی ملاقات کریگا اور تاجروں کے اس مطالبے سے انہیں آگاہ کریگا کہ وہ ایس آر او 608 کے بارے میں اپنے اعلیٰ حکام کو آگاہ کریں اور تاجروں میں پائی جانیوالی بے چینی کو فوری طور پر دور کرنے کےلئے ایس آر او 608 کے نفاذ کا فیصلہ واپس لے۔

مزید :

کامرس -