بہاولپور ، بھارتی سمگل شدہ گٹکے کی سرعام فروخت ، منہ اور گلے کے امراض میں اضافہ

بہاولپور ، بھارتی سمگل شدہ گٹکے کی سرعام فروخت ، منہ اور گلے کے امراض میں ...

بہاول پور(بیورورپورٹ)نوجوان نسل منہ اورگلے کے کینسرمیں مبتلا ہونے لگے بہاول پومیں انڈین گٹکے کی کھلے عام فروخت جاری‘ غیرقانونی طورپربہاول پورمیں سمگل ہوکر انڈین گٹکے کی روزانہ فروخت لاکھوں روپے سے تجاوز کرگئی ذرائع کے مطابق بہاول پورشہرمیں انڈین گٹکے (بقیہ نمبر22صفحہ12پر )

کی فروخت عروج پرپہنچ چکی ہے انڈین گٹکہ ون ٹوون‘ 2100 ‘ رتن‘ شیکھر‘زعفران‘ جے ایم کی بہاول پورمیں روزانہ فروخت لاکھوں روپے سے تجاوزکرچکی ہے اوربہاول پورمیں روزانہ ہزاروں پیکٹ فروخت ہورہے ہیں جبکہ ایک پیکٹ 570 روپے میں فروخت کیاجاتاہے بہاول پوراوراس کے گردونواح میں بھارتی سے سمگل شدہ گٹکے کی سرعام فروخت کی جارہی ہے اور دکانوں پر کھلے عام پانچ روپے کاپان پراگ ون ٹوون اور جے ایم انڈین گٹکافروخت کیاجارہاہے ایک دکاندرنے نام نہ بتانے پر بتایا کہ دھوبی والی گلی شاہی بازار‘ عیدگاہ‘سرائیکی چوک‘ فتح خان بازار سرکلرروڈ پر ختم نبوت چوک(چوک فوارہ)پر واقع ان بھارتی گٹکہ کے ہول سیلرز سے یہ گٹکہ باآسانی مل جاتاہے گٹکہ کے ایک ساشے کی قیمت صرف پانچ روپے ہیں جس میں سے ہمیں دوتین روپے فی پیکٹ بچ جاتے ہیں دکاندارنے بتایا بھارتی گٹکہ کی بہت مانگ ہے اور زیادہ تر ٹین ایجر زاورنوجوان طبقہ اس کوشوق سے کھاتاہے اس حوالہ سے جب ہم نے ڈاکٹرراؤجاویداقبال سے معلوم کیا توانہوں نے بتایا کہ گٹکہ میں موجود کیمیکل اورتیزاب گلے منہ کے کینسرکاباعث بنتاہے اوراسکوریگولراستعمال کرنے والا چندسال میں ہی گلے اورمنہ کے کینسر میں مبتلا ہوجاتاہے شہریوں محمدفیضان بن فضل ، امان اللہ فاروق ، نسیم اختر،خالدشاہ، ودیگرنے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیاکہ فوری طورپر بھارتی گٹکاسمیت بہاول پورمیں مقامی گٹکا کی فروخت پر پابندی عائدکی جائے اوران کو سپلائی اور فروخت کرنے والے ہول سیلرز کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے ۔

بھارتی سمگل شدہ گٹکا

مزید : ملتان صفحہ آخر