ترقیاتی فنڈز نہ دیئے گئے تو احتجاجی تحریک چلائینگے ،تحصیل کونسل مردان

ترقیاتی فنڈز نہ دیئے گئے تو احتجاجی تحریک چلائینگے ،تحصیل کونسل مردان

مردان (بیورورپورٹ ) تحصیل کونسل مردان نے ترقیاتی فنڈ ز کی براہ راست واٹر اینڈ سینیٹیشن سروسز کمپنی کو منتقلی کے خلاف علم بغاوت بلند کرتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ اگر صوبائی حکومت نے ترقیاتی فنڈز ٹی ایم اے کو منتقل نہ کئے تو حکومت کے خلاف احتجاجی تحریک چلائیں گے۔ ٹی ایم اے نے کونسل کی مشاورت سے فنڈز کی منتقلی کے خلاف ہائی کورٹ میں رٹ پیٹشن بھی ڈائر کی ہے۔اس حوالے سے کونسلروں کا اجلاس تحصیل ناظم محمد ایوب خان کی صدارت میں ہوا جس میں تحصیل کونسل کے نائب ناظم مشتاق سیماب اور پارلیمانی جماعتوں کے رہنماؤں نے شرکت کی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے محمد ایوب خان اور مشتا ق سیماب نے کہاکہ ترقیاتی فنڈز کی براہ راست کمپنی کو منتقلی سے 46یونین کونسلوں میں ترقیاتی منصوبے التواء کے شکار ہو گئے ہیں جبکہ کمپنی صرف چودہ شہری یونین کونسلوں میں صفائی اور واٹر سپلائی کی سہولیات فراہم کر رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ٹی ایم اے واٹر اینڈ سینیٹیشن سروسز کمپنی کو اب تک69کروڑ روپے ادا کر چکی ہے اورحساب کتاب کے بعد27کروڑ روپے کمپنی کے ذمہ واجب الادا ہے اور انہوں نے ابھی تک وہ بھی ٹی ایم اے کو نہیں دیا اوراس میں لیت ولعل سے کام لے رہی ہے۔اجلاس میں اراکین کونسل نے فیصلہ کیا کہ اگر صوبائی حکومت نے ترقیاتی فنڈز کمپنی سے واپس ٹی ایم اے منتقل نہیں کئے تو حکومت کے خلاف احتجاجی تحریک چلائی جائے گی جس میں احتجاجی مظاہرے،احتجاجی کیمپ اور مردان میں میونسپل سروسز کی بندش کے ساتھ ساتھ سڑکوں پر نکل کر دفاتر کو بند کر دیں گے۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اراکین کونسل شاکر خان، الیاس طورو،ہارون خان،اشفاق لودھی،ظاہر خان،عبد المالک،ڈاکٹر طفیل اور دیگر نے کہا کہ فنڈز کی براہ راست منتقلی سے عوام کا حق چھیننا گیا ہے اور اسے ہر صورت لے کے رہیں گے۔انہوں نے نیب اور انٹی کرپشن سے کمپنی کو دی جانے والی فنڈز کی تحقیقات کا مطالبہ بھی کیا ہے۔انہوں نے کہاہے کہ صوبے کے سات ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز میں حکومت نے سینیٹشن کمپنیاں بنائی ہے لیکن اب حکومت کے پاس اس کو چلانے کے لئے وسائل دستیاب نہیں ہے اور تحصیل کونسل کے اراکین کا ترقیاتی فنڈز کمپنی کو منتقل رہے ہیں جس سے براہ راست عوام کے فلاح و بہبود کے منصوبے رک جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ تحصیل کونسل مردان دیگر ڈویژن کے ساتھ بھی رابطے میں ہیں اور بہت جلد اس حوالے سے صوبائی سطح پر احتجاجی مظاہرے اور احتجاجی دھرنے دیے جائیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر