وہ چیز جو جس کسی کو بھی پلائی جائے وہ سچ بولنا شروع کردیتا ہے

وہ چیز جو جس کسی کو بھی پلائی جائے وہ سچ بولنا شروع کردیتا ہے
وہ چیز جو جس کسی کو بھی پلائی جائے وہ سچ بولنا شروع کردیتا ہے

  


واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)سر درد ہو یا بخار ہم دوا کا استعمال کرتے ہیں لیکن کوئی ایسی دوا بھی ہے جو کسی انسان کو سچ کہنے پر مجبور کر دے؟ بظاہر تو یہ ناممکن بات دکھائی دیتی ہے مگر کہتے ہیں کہ امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے پاس ایک ایسی دوا ہے جو کسی کو بھی پلا دی جائے تو وہ بے اختیار سچ اگلنا شروع کر دیتا ہے۔

اخبار ”دی مرر“ کے مطابق حال ہی میں افشاءکی گئی امریکی سرکاری دستاویزات سے پتہ چلتا ہے کہ جب امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے القاعدہ کے سینئر رکن ابو زبیدہ سے ہر طرح کے تشدد اور حتٰی کہ واٹر بورڈنگ کے باوجود کچھ اگلوانے میں ناکام ہوگئی تو اس پر ”ٹروتھ سیرم“ استعمال کرنے کے بارے میں غور و غوض کیا گیا۔ امریکی خفیہ اہلکار 9/11دہشتگردی کے متعلق القاعدہ ارکان سے معلومات نکلوانا چاہتے تھے اور ان کا خیال تھا کہ ٹروتھ سیرم نامی دوا اس سلسلے میں ان کی مدد کرے گی۔

افشاءکی گئی دستاویزات سے مزید پتہ چلتا ہے کہ امریکی خفیہ ایجنسی نے ”پراجیکٹ میڈیکیشن“ کے نام سے ایک منصوبے کا آغاز کیا تھا جس کا مقصد ایک ایسی دوا کی تیاری تھا جو انسان کے دماغ پر اس کا اپنا کنٹرول ختم کر دے تا کہ اُس سے جو بھی پوچھا جائے وہ اس کا سچ جواب دینے پر مجبور ہو جائے۔ سی آئی اے القاعدہ ارکان ابوزبیدہ پر جو دوا استعمال کرنا چاہتے تھے اس کا نام versedبتایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ ابو زبیدہ کو 2002میں پاکستان سے گرفتار کیا گیا تھا ۔ سی آئی اے کا خیال تھا کہ وہ القاعدہ کے اعلیٰ ترین ارکان میں سے ایک ہے اور 9/11دہشتگردی کی منصوبہ بندی میں ملوث ہے۔ تاہم ابوزبیدہ کے وکلاءنے امریکی عدالت میں مﺅقف اختیار کیا کہ اُس کا دہشت گردی کی کاروائیوں سے کوئی تعلق واسطہ نہیں ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس