جے یو آئی (ف) کا پلان بی،دوسرے روز بھی مختلف شہروں میں دھرنے

جے یو آئی (ف) کا پلان بی،دوسرے روز بھی مختلف شہروں میں دھرنے

  



اسلام آباد،کراچی،تونسہ شریف،جیکب آباد، بنوں (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں)مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ کے پلان بی کے تحت ملک بھر میں دھرنوں کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری ہے،جمعیت علما اسلام (ف)کے کارکنوں نے وفاقی دارالحکومت اسلام آباداور کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں دھرنے دیکر سڑکیں بلاک کردیں۔ اسلام آباد میں جمعیت علما اسلام (ف)کے کارکنوں نے 26 نمبر چونگی سے جی ٹی روڈ بلاک کردی۔مظاہرین نے جی ٹی روڈ پر صف بندی کرتے ہوئے نمازِ جمعہ ادا کی، سڑک کی بندش کے باعث اطراف کی سڑکوں پر ٹریفک کا دبا بڑھ گیا جس سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔کراچی میں حب لکی چورنگی پر جے یو آئی ف کی جانب سے دھرنا جاری ہے جس میں کارکناں کی بڑی تعداد شریک ہے، دھرنے کے باعث حب ٹول سے پہلے کنٹینرز کی لمبی قطاریں لگ گئی ہیں۔تونسہ شریف میں جے یوآئی کی طرف سے پلان بی کے تحت دوسرے روز بھی کھڈ بزدار کے مقام پر دھرنا دے کربین الصوبائی انڈس ہائی وے کھڈ بزدار پل کو بلاک کردیا، انڈس ہائی وے بند ہونے کے باعث گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئی ہیں۔جے یو آئی کی مقامی قیادت نے مشاورت کے بعد مریضوں اور مسافر بسوں کیلئے انڈس ہائی وے روڈ کو تھوڑی دیر کیلئے کھولنے کے بعد دوبارہ بند کر دیا۔کندھ کوٹ میں جے یو آئی کے کارکنان نے بائی پاس گولا موڑ کے مقام پر دھرنا دے رکھا ہے، مظاہرین نے رکاوٹیں کھڑی کرکے ٹائر نذر آتش کیے اور روڈ بلاک کردیے۔ راستے کی بندش سے پنجاب اور بلوچستان سے سندھ میں داخل ہونے والی ٹریفک معطل ہوگئی ہے۔گھوٹکی میں جے یو آئی نے شاہراہ ٹول پلازہ کے مقام پر دھرنا دے دیا،کارکن بارش میں بھی احتجاج جاری رکھے ہوئے ہیں، قومی شاہراہ ٹول پلازہ پر جے یو آئی کے دھرنے کے باعث دونوں اطراف ٹریفک معطل ہے، دھرنے کے مقام پر جے یو آئی کارکنان کی جانب سے شامیانے لگائے گئے ہیں، مرکزی قیادت کے حکم پر چھوٹی بڑی مسافر گاڑیوں اور ایمبولینس کو راستہ دیا جارہا ہے۔موٹروے پولیس نے پنجاب سے سندھ آنے والی ٹریفک کو موٹروے کی طرف موڑ دیا۔نوشہرہ جی ٹی روڈ پر حکیم آباد کے مقام پر کارکنوں کا دھرنا ہے، دھرنے کے شرکا نے بارش سے بچنے کے لیے ٹینٹس کا انتظام کرلیا۔لوئر دیر میں بارش کے باوجود پل چوکی چکدرہ میں کارکن سڑک پر بیٹھے ہیں، مین شاہراہ پر دھرنے کے باوجود متبادل روٹس پر ٹریفک رواں دواں ہے۔ مانسہرہ شہر میں سابقہ ٹول پلازہ سے شاہراہ ریشم کو بھی بند کر دیا گیا۔بنوں میں انڈس ہائی وئے پر بھی دھرنا جاری ہے، شہری متبادل راستے استعمال کرنے پر مجبور ہیں۔جیکب آباد میں جے یو آئی کی جانب سے مرکزی کال پر سندھ بلوچستان کے بارڈر پر لگایا گیا دھرنا تیسرے روز بھی جاری رہا، جے یو آئی کے دھرنے کے باعث سندھ اور بلوچستان کا زمینی راستہ 3 روز سے معطل ہے ٹرکیں اور بڑی گاڑیاں شاہراہ کے دونوں اطراف سینکڑوں کی تعداد میں موجود ہیں جبکہ مسافر گاڑیاں متبادل راستے سے اپنی منزل کی طرف جارہی ہیں۔

دھرنا

مزید : صفحہ اول