بیوہ قتل‘ حادثات میں 2افراد جاں بحق‘ کیک کھانے سے بچہ چل بسا

بیوہ قتل‘ حادثات میں 2افراد جاں بحق‘ کیک کھانے سے بچہ چل بسا

  



جام پور‘ مظفر گڑھ‘ وہاڑی‘ لودھراں (نامہ نگار‘ بیورو رپورٹ‘ سٹی رپورٹر‘ نمائندہ پاکستان) 70سالہ بیوہ کو نامعلوم افراد نے قتل کردیا، حادثات میں 2افراد جاں بحق ہوگئے‘ جبکہ زہریلا کیک کھانے سے بچہ چل بسا‘ تفصیل کے مطابق کوٹلہ دیوان کے موضع قادو والا کی رہاشی امیر مائی سترہ سالہ خاتون لوگوں کے گھروں میں کام کرکے پیٹ پالتی تھیں۔ حسب معمول صبح سویرے گھر سے نکل کرکے کام کے (بقیہ نمبر45صفحہ12پر)

لیے گئی۔ واپس نہ آئی تو گیارہ بجے نزیر احمد ولد اللہ ڈیوایا نے بتایا کہ امیر مائی کی لاش کوٹلہ مغلان روڈ پرجھاڑیوں پر پڑی ہوئی ہے۔ جس کی گردن پر تشدد کے نشاں ہیں۔ پولیس نے لاش کو قبضہ میں لے کرکے پوسٹ مارٹم کرانے کے بعد نامعلوم ملزمان کے خلاف قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرکے اصل ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔اسی طرح ایک اور مقدمہ میں پولیس نے جرائم کی پڑتال کے دوران محمد عمر ولد محمد اجمل سے تیس بورپسٹل برامد کرکے مقدمہ درج کر لیا ہے۔ مظفرگڑھ میں واقع بستی رامو والا میں ریت کے ٹیلے پر کھیلتے ہوئے تین بچوں نے ریت کو گہرائی تک کھود کر گھر بنایا اور کلیم ولد غلام یسین عمر 14 سال ریت میں بنائے گئے گڑھے میں جا کر بیٹھا ہی تھا کہ ریت کا ٹیلہ گرنے سے دم گھٹنے سے جاں بحق ہوا۔ ریسکیو مظفرگڑھ کی ایمبولینس کا بروقت رسپانس۔ فوری ریسکیو آپریشن جاری کرتے ہوئے ہوئے بچے کو کو ریت سے نکال کر فوری قریبی ہسپتال منتقل کیا۔ ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر نے بچے کی موت کی تصدیق کر دی. نعش ورثا کے حوالے کر دی گئی. ایمبولینس کے ذریعے بچے کی نعش کو لواحقین کے گھر منتقل کر دیا گیا۔ جبکہ ریسکیو 1122 وہاڑی کو اطلاع ملتے ہی ایمبولینسیں روانہ کر دی ریسکیو 1122 وہاڑی نے بروقت رسپانس کرتے ہوئے زخمی موٹر سائیکل سوار کو فرسٹ ایڈ دیتے ہوئے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال شفٹ کر دیاموٹر سائیکل سوار شدید زخمی تشویشناک حالت میں تھا جس کو ڈاکٹرز نے ملتان نشتر ریفر کر دیا موٹر سائیکل زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے راستے میں جاں بحق ہو گیا ذرائع کے مطابق موٹر سائیکل سوار نوجوان چک 55 ڈبلیو بی کا رہائشی تھا اور شناخت واجد زبیر بھٹی ولد غلام عباس کے نام سے ہوئی نوجوان پنجاب کالج میں لیکچرار تھا اچانک جب نعش گھر پہنچی تو گاؤں میں کہرام مچ گیا ہر آنکھ اشک بار ہو گئی۔ دریں اثنا مبینہ طور پر غیر معیاری کیک کھانے سے بچہ جاں بحق زین العابدین نے کیک محلہ کی دوکان سے خریدا تھا بتا یا گیا ہے کہ پہلی جماعت کے معصوم طالب علم زین العابدین نے گھر کے ساتھ والی شاپ سے پانچ روپے والا کیک لیکر کھایا کیک کھانے سے منہ کڑوا ہوا اور طبعیت خراب ہوگی اور بچے کو ڈسٹرکٹ اسپتال لیکرجایا گیا جہاں حالت سنبھل نہ سکی اور جا ں بحق ہوگیا پولیس نے کیک کے سیمپل تحویل میں لیکر لیباٹری کیلئے بھجوادے ہیں لیباٹری رپوٹ آنے کے بعد مزید کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

قتل حادثات

مزید : صفحہ اول /ملتان صفحہ آخر