نوازشریف علیل لیکن اگر شہبازشریف کی جگہ عمران خان ہوتے تو کیا کرتے؟ جواب سامنے آگیا

نوازشریف علیل لیکن اگر شہبازشریف کی جگہ عمران خان ہوتے تو کیا کرتے؟ جواب ...
نوازشریف علیل لیکن اگر شہبازشریف کی جگہ عمران خان ہوتے تو کیا کرتے؟ جواب سامنے آگیا

  



اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ افسوس ہے شریف خاندان نواز شریف کے علاج کے بجائے اس پر سیاست کر رہا ہے، اگر وہ شہباز شریف کی جگہ ہوتے تو کسی بھی قسم کی گارنٹی دے کر اپنے بھائی کا علاج کرواتے۔

جیونیوز کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی کور کمیٹی اجلاس سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ن لیگ کی جانب سے ضمانتی بانڈ نہ دینے کی کوئی منطق سمجھ سے بالا ہے، حکومت نے ان سے کون سے پیسے مانگ لیے ہیں؟انہوں نے کہا کہ لگتا ہے شریف خاندان نواز شریف کی صحت پر اپنی سیاست چمکا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ شریف خاندان عدالت سے ریلیف لینا چاہتا ہے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں، وہ عدالت کے فیصلے کو من و عن تسلیم کریں گے۔

وزیراعظم نے کہا کہ نواز شریف بیمار ہیں اور ان کو بہتر علاج کے لیے باہر جانا چاہیے، میری نظر میں نواز شریف کی جان زیادہ عزیز ہے، سیاست ہوتی رہتی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ حکومت نے نواز شریف کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نکالنے کے لیے قانون میں لچک ڈھونڈی۔وزیر اعظم نے حکومتی ترجمانوں کو نواز شریف کی صحت پر بیان بازی سے اجتناب کی ہدایت بھی کی ہے۔

خیال رہے کہ 13 نومبر کو وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی نے نواز شریف کو علاج کی غرض سے 4 ہفتوں کیلئے بیرون ملک جانے کی مشروط اجازت دینے کا اعلان کیا تھا۔

وزیر قانون فروغ نسیم کے مطابق ’نواز شریف کی بیرون ملک روانگی اس بات سے مشروط ہے کہ نواز شریف یا شہباز شریف 7 یا ساڑھے 7 ارب روپے کے پیشگی ازالہ بانڈ جمع کرادیتے ہیں تو وہ باہر جاسکتے ہیں اور اس کا دورانیہ 4 ہفتے ہوگا جو قابل توسیع ہے‘ تاہم ن لیگ نے مشروط اجازت کو مسترد کرتے ہوئے اس کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔

مزید : قومی