وفاقی حکومت نے شہباز شریف کابیان حلفی کیوں مسترد کردیا؟وجہ سامنے آگئی

وفاقی حکومت نے شہباز شریف کابیان حلفی کیوں مسترد کردیا؟وجہ سامنے آگئی
وفاقی حکومت نے شہباز شریف کابیان حلفی کیوں مسترد کردیا؟وجہ سامنے آگئی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی حکومت نے نوازشریف اور شہباز شریف کی جانب سے جمع کرایا گیا بیان حلفی مسترد کردیاجس کی وجہ بتاتے ہوئے ایدیشنل اٹارنی جنرل اشتیاق احمد خان نے کہا مسودے میں کوئی ضمانت نہیں دی گئی اس لئے قابل قبول نہیں ہے۔بیان حلفی کے مسودے میں کہاگیاتھا کہ میاں نواز شریف صحتیاب ہونے اور ڈاکٹرز کی اجازت ملنے کے بعد وطن واپس آئیں گے اور تمام مقدمات کا سامنا کریں گے۔

نجی ٹی وی دنیا نیو زکے مطابق وفاقی حکومت نے شہباز شریف کی جانب سے جمع کرائے گئے بیان حلفی کو مسترد کردیاہے۔کمرہ عدالت میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ بیان حلفی میں کسی قسم کی ضمانت نہیں دی گئی، ہم اس کو کیسے تسلیم کرسکتے ہیں؟۔انہوں نے کہا نوازشریف سزا یافتہ ہیں اس لئے ہم نے ان سے بیان حلفی مانگاتھا لیکن شہبازشریف نے چند لائنیں لکھ دیں کہ نوازشریف صحتیاب ہوکر واپس آجائیں گے۔اٹارنی جنرل نے کہا کہ شہبازشریف خود کئی مقدمات کا سامنا کررہے ہیں وہ کسی قسم کی ضمانت دے ہی نہیں سکتے،انہیں چاہئے تھا کہ وہ بیان حلفی میں ضمانت دیتے۔نائنٹی ٹونیوز کے مطابق ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ شہباز شریف کی جانب سے جمع کرائے گئے مسودے کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔وفاقی حکومت اپنا مسودہ تیارکرکے عدالت کو جمع کروائے گی۔انہوں نے بتایا کہ مسودہ تیارکیاجارہاہے جو عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

مزید : اہم خبریں /قومی