”ایسے دستور کو ، صبحِ بے نور کو میں نہیں مانتا“ حبیب جالب کو تو سب ہی جانتے ہیں لیکن ان کی بڑی صاحبزادی کس حال میں ہے؟ ایسی خبر آگئی کہ پوری قوم کا سر شرم سے جھک گیا

”ایسے دستور کو ، صبحِ بے نور کو میں نہیں مانتا“ حبیب جالب کو تو سب ہی جانتے ...
”ایسے دستور کو ، صبحِ بے نور کو میں نہیں مانتا“ حبیب جالب کو تو سب ہی جانتے ہیں لیکن ان کی بڑی صاحبزادی کس حال میں ہے؟ ایسی خبر آگئی کہ پوری قوم کا سر شرم سے جھک گیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف انقلابی و عوامی شاعر حبیب جالب کے نام سے پوری قوم واقف ہے ، سیاستدان بھی ان کی مشہور زمانہ نظم ”ایسے دستور کو ، صبحِ بے نور کو میں نہیں مانتا، میں نہیں جانتا“ پڑھ کر خوب ووٹ حاصل کرتے ہیں لیکن شاید حبیب جالب کے بقول ” حکمراں ہوگئے کمینے لوگ“ ، اسی لیے معروف شاعر کے اہلخانہ انتہائی کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں۔

حبیب جالب کا انتقال 1993 میں جبکہ ان کی اہلیہ نے 2014 میں اس جہانِ فانی سے کوچ کیا۔ حبیب جالب کے بچے معمولی نوعیت کے مختلف کام کرکے اپنا گزر بسر کرتے ہیں، ان کی سب سے بڑی صاحبزادی طاہرہ حبیب جالب لاہور میں ڈھائی مرلے کے مکان میں رہتی ہیں اورگزر بسر کیلئے ٹیکسی چلاتی ہیں۔ جی بالکل آپ نے ٹھیک پڑھا ہے، حبیب جالب کی صاحبزادی طاہرہ حبیب جالب مختلف تقریبات میں اپنے والد کی نمائندگی کرتی ہوئی تو نظر آتی ہیں لیکن اپنے پیٹ کا دوزخ بھرنے کیلئے وہ کریم کی ٹیکسی چلاتی ہیں۔ جس وقت 2014 میں حبیب جالب کی اہلیہ کا انتقال ہوا تو اس وقت ان کا سب سے چھوٹا صاحبزادہ یاسر مرغی کے گوشت کی دکان چلاتا تھا۔

۔۔۔ حبیب جالب کے اہلخانہ کی کسمپرسی کی عکاسی کرتی ایک پرانی ویڈیو ۔۔۔

مزید : قومی /ادب وثقافت /علاقائی /پنجاب /لاہور