لیگی رہنما جاوید لطیف نے حکومت کا مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کرنا بے سود قراردیدیا

لیگی رہنما جاوید لطیف نے حکومت کا مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کرنا بے سود ...
لیگی رہنما جاوید لطیف نے حکومت کا مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کرنا بے سود قراردیدیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما جاوید لطیف نے کہاہے کہ اس وقت مولانا فضل الرحمان ، ن لیگ اور پیپلز پارٹی سے مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہے ، یہ عوام کامسئلہ ہے اور عوام کامسئلہ استعفیٰ ہے ۔

دنیانیوز کے پروگرام ”آن دا فرنٹ“میں گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ اس وقت مولانا فضل الرحمان ، ن لیگ اور پیپلز پارٹی سے مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہے ، یہ عوام کامسئلہ ہے اور عوام کامسئلہ استعفیٰ ہے ۔ انہوںنے کہا کہ عوام کے مہنگائی اور کشمیر پر تحفظات ہیں جن کاحل کئے بغیر مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہے ، وزراءکا مسئلہ یہ ہے کہ ان میں عمران خان بولتے ہیں ، اگر ن لیگ کے دورمیں نواز شریف ذمہ دار تھے تو آج عمران خان ذمہ دار ہیں ۔

جاوید لطیف کا کہنا تھاکہ وزیر خارجہ نے جو گفتگو فرمائی ہے ، اس کے بعد رونا آرہاہے کہ اس حکومت کے پاس مینڈیٹ ہے کہ وہ خطے میںکردار ادا کررہی ہے ، گھر تو سنبھالا نہیں جارہا لیکن خطے میں ثالثی کرنے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جس طرح اس وقت پاکستان محفوظ ہاتھوں میں ہے ، اس طرح پنجاب بھی محفوظ ہاتھوں میں ہے ، اس وقت پنجاب میں کرپشن انتہا پر پہنچ گئی ہے کہیں وہ وقت نہ آجائے کہ لوگ صوبو ں سے ہٹ کر ڈویژن کی سطح پر تقسیم کی بات کرنا شروع کردیں۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے تباہی مچا دی ہے ، پہلے پنجاب کے ہسپتالوں میں دوائی مفت ملتی تھی ،تعلیم کا نظام درست تھا ۔

مزید : قومی