بجلی،گھی، خوردنی تیل کی قیمتوں میں اٖضافہ، حکومت منی بجٹ لے آئی، (ن) لیگ، 3سال میں بجلی 40فیصد مہنگی ہوئی، پیپلز پارٹی، حکومت کا ہدف غربت نہیں غریب کا خاتمہ ہے:پی ڈی ایم 

  بجلی،گھی، خوردنی تیل کی قیمتوں میں اٖضافہ، حکومت منی بجٹ لے آئی، (ن) لیگ، ...

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی)حکومت نے مہنگائی سے  ماری  عوام پر بجلی اور گھی کا بم گرا دیا۔ یوٹیلیٹی اسٹورز پر مختلف برانڈز کے گھی اور آئل کی قیمتوں میں 109روپے فی کلو تک اضافہ کر دیا جسکے بعد ڈالڈ گھی کے  10کلو کا کین 2500روپے بڑھ کر 3590روپے کا ہوگیا  جبکہ حکومت نے بجلی کی قیمتوں میں بھی  مزید 1روپے 39پیسے فی یونٹ کا اضافہ کردیا ہے، قیمت میں اضافہ سہہ ماہی ٹیرف ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا، کابینہ نے سرکولیشن سمری کے ذریعے بجلی مہنگی کرنے کی منظوری دی ہے۔تفصیلات کے مطابق یوٹیلیٹی اسٹورز پر مہنگائی کا نیا طوفان برپا کردیا گیا ہے، اور مختلف برانڈز کے گھی کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیا ہے۔ اس حوالے سے نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا، جب کہ قیمتوں میں اضافے کا اطلاق فوری ہوگا۔یوٹیلیٹی اسٹورز پر ملنے والے ڈالڈ گھی کی فی کلو قیمت میں 109روپے اور 10لیٹر کین میں 1090روپے کا ہوشربا اضافہ کیا گیا ہے، جس کے بعد ڈالڈا گھی کا 10لیٹر کا کین 2500 روپے بڑھ کر 3590روپے کا ہوگیا۔  اسی طرح میزان گھی کے 10لیٹر ٹن کی قیمت میں 475روپے کا اضافہ کیا گیا ہے، جس کے  بعد میزان گھی کے 10 لیٹر ٹن کی قیمت 2885سے بڑھا کر 3360روپے مقرر کی گئی ہے۔یوٹیلیٹی اسٹورز پر 5لیٹر پلانٹا کوکنگ آئل کی قیمت میں 463روپے کا اضافہ کیا گیا ہے، جب کہ من پسند کوکنگ آئل کی قیمت 465روپے تک بڑھا دی گئی ہے، جس کے بعد من پسند 5لیٹر کوکنگ آئل ٹن کی قیمت 1245سے بڑھ کر 1710 روپے ہوگئی ہے۔جبکہ کپڑے دھونے کا سرف 500 گرام پیک 5 روپے مہنگا کرکے170روپے کا کردیا گیا، صابن3 روپے مہنگا کرکے133 روپے ہوگیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جوتوں کی پالش10 روپے اضافے کے بعد110 روپے کی کردی گئی، کپڑوں کا نیل 1 لیٹر پیک25 روپے مہنگاہوکر قیمت 439 روپے سے بڑھا کر464 روپے ہوگئی ہے۔شیمپو4 روپے مہنگا کرکے195 روپے کا کردیا گیاجبکہ مختلف کمپنیوں کے پکوان مصالحے4روپے سے لیکر5 روپے فی پیک تک مہنگے کردیئے گئے دوسری جانب حکومت نے بجلی کی قیمتوں میں مزید 1روپے 39پیسے فی یونٹ کا اضافہ کردیا اور بجلی کی قیمتوں میں 1روپے 39پیسے فی یونٹ کا اضافہ کردیا گیا، ذرائع کا کہنا تھا کہ وفاقی کابینہ نے بجلی مہنگی کرنے کی منظوری دے دی ہے۔  بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی سمری وزارت توانائی کی جانب سے بھجوائی گئی تھی۔ بجلی کی قیمت میں اضافہ سہہ ماہی ٹیرف ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا ہے، کابینہ نے سرکولیشن سمری کے ذریعے بجلی مہنگی کرنے کی منظوری دی، نیپرا نے سہہ ماہی ٹیرف ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی مہنگی کرنے کا فیصلہ کیا تھا، نیا سہہ ماہی ٹیرف ایڈجسٹمنٹ میں اضافہ یکم اکتوبر سے لاگو ہوگا۔

بجلی گھی مہنگا

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی)ادارہ شماریات نے ہفتہ وار مہنگائی کے اعدادوشمار جاری کردیئے جسکے مطابق ایک ہفتے میں مہنگائی میں 0.20 فیصد کا اضافہ ہوگیا۔ادارہ شماریات کے مطابق مہنگائی کی مجموعی سالانہ شرح 12.66 فیصد تک پہنچ گئی، کم آمدنی والوں کیلئے مہنگائی کی شرح 14.12 فیصد تک پہنچ گئی۔ ادارہ شماریات کے مطابق ایک ہفتے میں 22 اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا، ٹماٹر کی فی کلو قیمت میں 11 روپے تک اضافہ ریکارڈ کیا گیا، ایل پی جی گھریلو سلنڈر کی قیمت میں 43 روپے سے زائد کا اضافہ ہوا، برانڈڈگھی کا اڑھائی کلو کا ٹن 6 روپے 90 پیسے مہنگا ہوا، برانڈڈ گھی فی کلو 2 روپے 99 پیسے مہنگا ہوا۔ادارہ شماریات کے مطابق لہسن، چاول، مٹن، آلو، گڑ مہنگی ہونے والی اشیاء میں شامل ہیں،ایک ہفتے میں 10 اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں قیمتوں میں کمی ہوئی، ایک ہفتے میں چینی 6 روپے 72 پیسے سستی ہوئی،زندہ مرغی فی کلو 4 روپے اور انڈے فی درجن 6 روپے تک سستے ہوئے، آٹے کا 20 کلو تھیلا 11 روپے سستا ہوا، دال ماش، دال مونگ، دال مسور اور کیلے سستی ہونے والی اشیاء میں شامل ہیں،ایک ہفتے میں 19 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

ادارہ شماریات

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ن) پیپلز پارٹی اور جے یو آئی ف نے  بجلی اور گھی کی قیمتوں اضافے پر حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا  مسلم لیگ ن کے صڈر اور اپوزیشن لیڈر  شہبازشریف نے بجلی، پٹرول،ٹیکس میں اضافہ کو منی بجٹ قرار دیتے ہوئے کہاکہ بجٹ تقریر میں نے جو کچھ کہا تھا، وہ سچ اور حکومت جھوٹی ثابت ہوگئی،میں نے کہا تھا کہ حکومت منی بجٹ لائے گی، آج یہ بات سچ ثابت ہوگئی،ثابت ہوگیا کہ حکومت نے بجٹ کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا، یہ حکومت چلے گی تو معیشت نہیں چلے گی،یہ حکومت چلے گی تو غریب کی روٹی، روزگار اور کاروبار نہیں چلے گا۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ ٹیکس چھوٹ والی اشیاپر 17 فیصد سیلز ٹیکس لگانے، پٹرول، بجلی کی قیمت میں اضافہ عوام اور معیشت کے خلاف دہشت گردی ہے۔مہنگائی، بے روزگاری اور معاشی تباہی پہلے ہی تاریخ کی بلند ترین سطح پر ہے، حکومت نے ایک نیا بم پھینک دیا ہے۔عمران نیازی آئی ایم ایف کی قربان گاہ پر معیشت اور قوم کو قربان کررہے ہیں۔آئی ایم ایف کی شرائط پر اندھا دھند عمل کرنے والی حکومت نے عوام کے مفاد کا خیال نہیں رکھا۔ عمران نیازی خود ایسے اقدامات کررہے ہیں جس سے مہنگائی بڑھتی ہے، پھر قوم سے شکوہ کرتے ہیں کہ عوام کو مہنگائی بڑھنے کی وجوہات سمجھ نہیں آرہی،قوم کو اچھی طرح سمجھ آرہی ہے کہ ان کے ساتھ کیا ہورہا ہے اور کون یہ ظلم ہر روز ڈھارہا ہے۔مسئلہ قوم کی سمجھ کا نہیں بلکہ حکمرانوں کی کرپشن، جھوٹ اور تاریخی نالائقی ونااہلی کا ہے۔۔انہوں نے کہاکہ عمران نیازی عوام اور پاکستان کے لئے نہیں، آئی ایم ایف کے لئے کام کر رہے ہیں۔اتنی سنگین مہنگائی ملک کی معاشی وائیبیلٹی کا سنگین مسئلہ پیدا کر رہی ہے جو پاکستان کے لئے نیک فال نہیں،اضافہ مسترد کرتے ہیں، حکومت یہ ظالمانہ فیصلہ واپس لے۔عمران نیازی ظالم، کرپٹ اور اناہل حکمران ہیں۔پاکستان پیپلز پارٹی کی  نائب صدر    شیری رحمان نے کہا کہ بجلی کی قیمت میں اضافے کی منظوری کی مذمت کرتے ہیں، عوام پر اربوں روپے کا بوجھ منتقل کیا جا رہا ہے، حکومت نے 3 سال میں بجلی کی قیمت میں 40 فیصد سے زائد اضافہ کیا۔نائب صدر پیپلز پارٹی شیری رحمان نے بجلی اور پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ 1.68 فی یونٹ اضافہ کر کے عوام پر اربوں روپے کا بوجھ منتقل کیا جا رہا ہے، اس حکومت نے 3 سال میں بجلی کی قیمت میں 40 فیصد سے زائد اضافہ کیا ہے۔ پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ بجلی مزید 1 روپے 68 پیسے مہنگی کر کے تحریک انصاف حکومت نے عوام پر مہنگائی کا نیا تازیانہ برسایا ہے،عوام کے منہ سے نوالے پر نوالہ چھین کر اب بجلی کے بلوں کی مد میں مزید رقم اینٹھی جائے گی۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ تین سال میں گردشی قرض دوگنا سے زیادہ ہو کر 2.5 کھرب ہوگیا ہے، اور بجلی کی قیمتوں میں ظالمانہ اضافہ کرکے بھی گردشی قرض دوگنا ہونا نااہلی کی انتہا ہے۔ اس حکومت نے مہنگائی اور نااہلی سے تین سالوں میں عوام کا بھرکس نکال کر رکھ دیا ہے لوگ یاد رکھیں کہ مہنگائی کے ہر پروانے پر عمران خان خود دستخط کرتے ہیں۔ چکی کا آٹا بھی 82 روپے کا ہو چکا ہے روٹی کی قیمتیں بھی بڑھنے والی ہیں حکومت اپنی موج میں مست ہے۔مولانا حمداللہ نے کہان کہ حکومت نے  بجلی کی قیمتوں میں اضافے سے عوام کی جیبوں پر اربوں روپے کا ڈاکہ ڈالاہے، جھوٹی حکومت اورتباہی سرکارنے تین سالوں میں چالیس فیصد پٹرول قیمتوں میں اضافہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان صاحب آپ نے بجٹ میں عوام کوریلیف دینے کاوعدہ کیاتھا کہاں ھے وہ ریلیف؟ پی ٹی آئی حکومت کاحدف غربت نہیں غریب کاخاتمہ ہے۔ترجمان پی ڈی ایم  نے کہاکہ پی ڈی ایم ملک اورقوم کواس عذاب سے نجات دلانے کیلئیے سڑکوں پرھے، پی ڈی ایم  آج نا اہل اور نا جائز حکمرانوں کے خلاف فیصل آباد میں تاریخ ساز جلسہ کرے گی

اپوزیشن جماعتیں 

مزید :

صفحہ اول -