پنجابی میں تعلیم پنجاب کے بچوں کابنیادی  حق ہے ، حکومتی و اپوزیشن رہنماؤں کا دسویں سالانہ پنجابی پڑھاؤ ریلی ، سیمینار سے خطاب

پنجابی میں تعلیم پنجاب کے بچوں کابنیادی  حق ہے ، حکومتی و اپوزیشن رہنماؤں کا ...
پنجابی میں تعلیم پنجاب کے بچوں کابنیادی  حق ہے ، حکومتی و اپوزیشن رہنماؤں کا دسویں سالانہ پنجابی پڑھاؤ ریلی ، سیمینار سے خطاب

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)  پنجابی زبان کو ذریعہ تعلیم بنانے کے لیے لاہور پریس کلب میں سیمینار منعقد کیا گیا جس کے بعد ریلی نکالی گئی۔ سیمینار کا انعقاد پنجابی تنظیموں اور لاہور پریس کلب کے اشتراک سے کیا گیا جس  سے خطاب کرتے ہوئے ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب حسان خاور نے کہا کہ پنجابی زبان پاکستان کی سب سے بڑی زبان ہے لیکن افسوسناک امر ہے کہ باقی صوبوں کی طرح پنجاب کی زبان کو اس کا حق نہیں مل سکا، مادری زبان میں تعلیم ہر بچے کا بنیادی حق ہے،  تحریک انصاف کی حکومت اس حوالے سے عملی اقدامات کرے گی ۔ ماضی میں پنجابی زبان کو نظر انداز کیے جانے کے حوالے سے جو کچھ ہو چکا اس کی ذمہ دار ہماری حکومت نہیں،  میں وزیر تعلیم مراد راس سے خود بات کروں گا،  وزیر اعلیٰ پنجاب تک بھی یہ مطالبہ پہنچاؤں گا  اور اس حوالے سے ٹھوس اقدامات کیے جائیں گے۔ 

مسلم لیگ ن کے رہنماء محمد احمد خان نے کہا کہ ایک دور تھا کہ پنجاب اسمبلی میں پنجابی زبان میں تقریر کی اجازت نہیں تھی ۔ عبدالرشید بھٹی کو پنجابی میں تقریر سے روکا گیا تھا،  حکومتوں نے پنجابی زبان کو مسلسل نظرانداز کیا لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ ماضی کی غلطیوں کی  اصلاح کی جائے اور پنجابی کو اس کا اصل مقام دیا جائے جس کے لیے میں ہر سطح پر آواز اٹھاوں گا۔ 

پیپلزپارٹی کے رہنما فیصل میر کا کہنا تھا کہ بچے کو صحیح تعلیم اس کی مادری زبان میں  ہی دی جا سکتی ہے، پیپلزپارٹی ہر صوبے کے اس حق کو تسلیم کرتی ہے ، سندھ میں سندھی کو اس کا اصل مقام دیا گیا ،  پنجاب میں پنجابی زبان کو ویسا ہی مقام دلوانے کے لیے پیپلزپارٹی پنجابی تنظیموں سے متفق ہے اور ہرسطح پر ان کے شانہ  بشانہ ہو گی۔

 پنجاب نیشنل پارٹی پاکستان کے چیئرمین چوہدری مطلوب وڑائچ نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم کوئی غلط مطالبہ نہیں کر رہے، پنجابی زبان کو اس کا جائز مقام دلوانے کے لیے ہر سطح پر تحریک چلانے کے لیے تیار ہیں۔ اس موقع پر لاہور پریس کلب کے سینئر نائب صدر جاوید فاروقی اور جنرل سیکرٹری زاہد چوہدری نے مہمانوں اور شرکا کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پنجاب کو اس حق دلوانا  ہمارا فرض ہے جس کے لیے ہم نے پنجابی تنظیموں کی مشاورت سے یہ سلسلہ شروع کیا ہے جو آئندہ بھی جاری رہے گا۔

 سیمینار سے پنجابی پرچار کے صدر احمد رضا وٹو،  پنجابی یونین کے صدر مدثر اقبال بٹ، پروفیسر طارق جتالہ، الیاس گھمن، آپا دیپ سعیدہ ، حکیم احمد نعیم ارشد، بابا نجمی، پنجابی ادبی بیٹھک کے صدر میاں آصف علی، پنجابی ادبی بورڈ کی جنرل سیکریٹری پروین ملک، پنجابی ویہڑہ قصور احمد اقبال بزمی، پنجابی کھوج گڑھ کے اقبال قیصر، پنجاب سوشل موومنٹ کے صدر ظاہر بھٹی،  خلیل اوجلہ اور دیگر  پنجابی رہنماؤں نے بھی خطاب کیا۔

سیمینار کے بعددسویں سالانہ پنجابی پڑھاؤ ریلی بھی نکالی گئی  جس  میں سینکڑوں  افراد نے شرکت کی۔  پنجاب پرچار کے صدر احمد رضا وٹو نے کہا کہ ہر سال اکتوبر میں پنجابی پڑھاؤ ریلی کا جو سلسلہ کئی برس قبل پنجابی پرچارنے شروع کیا تھا وہ اب برینڈ بن چکا ہے اور ہمارے اس مطالبے کو حکومتی سطح  پر بھی تسلیم کیا جانے لگا ہے،  وہ دن دور نہیں جب ہم اپنا مقصد حاصل کر لیں گے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -