پانی کی قلت سے زراعت کا شعبہ بری طرح متاثر ہو رہا ہے

پانی کی قلت سے زراعت کا شعبہ بری طرح متاثر ہو رہا ہے

گوجرہ (اے پی پی)پاکستان کسان ویلفیئر کونسل کے چیئرمین چوہدری عبداللطیف سہو نے کہاہے کہ پانی زراعت کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے جبکہ پانی کی قلت سے زراعت کا شعبہ بری طرح متاثر ہو رہا ہے لہٰذا اگر بڑے آبی ذخائر یا چھوٹے چھوٹے ڈیمز بنا دیئے جائیں تو 7ملین ایکڑ فٹ سے زائد ضائع ہونے والا پانی ذخیرہ کر کے زرعی ترقی کیلئے استعمال میں لایا جا سکتا ہے جو نہ صرف زراعت کے شعبہ میں سر سبز انقلاب لانے کا پیش خیمہ ثابت ہو سکتا ہے بلکہ اس سے ملک کو اقتصادی طور پرمضبوط بنانے میں بھی مدد مل سکتی ہے ۔ میڈیاسے بات چیت کے دوران انہوں نے کہا کہ اگر بڑے آبی ذخائر کی تعمیر فوری طور پر ممکن نہیں تو چھوٹے منصوبے بھی شروع کئے جا سکتے ہیں تاکہ پانی کی قلت زرعی شعبہ کو متاثر نہ کر سکے ۔انہوں نے کہا کہ مون سون کے دوران ہونے والی شدید بارشوں کو آبی ذخائر میں ذخیرہ کر کے جہاں سیلابی صورت حال سے بچا جاسکتا ہے وہیں یہ پانی آبپاشی کیلئے بھی استعمال میں لایا جاسکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر منصوبہ بندی کا فقدان اسی طرح جاری رہا تو پانی کی قلت ملک پر انتہائی منفی و مضر اثرات مرتب کرے گی ۔

مزید : کامرس