خواجہ احمد حسان کی بلامقابلہ کامیابی کالعدم قرار دینے کیلئے دائر درخواست واپس لینے کی بنیاد پرخارج

خواجہ احمد حسان کی بلامقابلہ کامیابی کالعدم قرار دینے کیلئے دائر درخواست ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے خواجہ احمد حسان کی یو نین کونسل 107 سے بلامقابلہ چیئرمین کامیابی کالعدم قرار دینے کی دائر درخواست واپس لینے کی بنیاد پرخارج کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ امیدوار کی کامیابی کا نوٹیفیکیشن جاری ہونے سے پہلے درخواست ناقابل سماعت ہے۔مسٹرجسٹس شاہد کریم کی عدالت میں تحریک انصاف کے راہنما زبیرخان نیازی کی جانب سے خواجہ احمد حسان کی بلامقابلہ کامیابی کے خلاف دائر درخواست کی سماعت ہوئی۔ درخواست گزارکے وکیل شیرازذکاء ایڈووکیٹ نے الیکشن کمیشن ، پنجاب حکومت ،خواجہ احمدحسان اوریونین کونسل 107کے ریٹرننگ افسرکوفریق بناتے ہوئے موقف اختیارکیا کہ خواجہ احمدحسان ایل ٹی سی کے وائس چیئرمین رہے۔ انہوں نے وائس چیئرمین کی حیثیت سے فنڈزکاناجائز استعمال کیا،وہ آئین کے آرٹیکل 62 اور63 پر پورانہیں اترتے۔انہوں نے استدعا کی کہ خواجہ احمدحسان کی بلامقابلہ کامیابی کوکالعدم قراردیا جائے، عدالت نے درخواست گزارکے وکیل سے خواجہ حسان کی کامیابی کا نوٹیفکیشن طلب کیا تووہ پیش نہ کرسکے۔ درخواست گزارکے وکیل کا کہناتھا کہ ابھی نوٹیفکیشن جاری نہیں ہواجس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ کہ نوٹیفکیشن جاری ہونے سے قبل درخواست قابل سماعت نہیں ہے جس پر درخواست گزارکے وکیل نے خواجہ احمد حسان کی کامیابی کو کالعدم قراردینے کے لئے دائرپٹیشن واپس لینے کی استدعا کی، عدالت نے درخواست واپس لینے کی استدعامنظورکرتے ہوئے اسے مسترد کردیا۔

مزید : صفحہ آخر