نوجوان مذاق میں ویاگرا کی 35 گولیاں کھا بیٹھا اور پھر۔۔۔

نوجوان مذاق میں ویاگرا کی 35 گولیاں کھا بیٹھا اور پھر۔۔۔
نوجوان مذاق میں ویاگرا کی 35 گولیاں کھا بیٹھا اور پھر۔۔۔

  


لندن (نیوز ڈیسک) سائنسدانوں نے دکھی مردوں کے سہارے کیلئے مردانہ طاقت کی گولی ایجاد کی تھی جس کا مقصد مایوسی کے شکار جوڑوں کی مدد کرنا تھا، مگر بدقسمتی سے غیر ذمہ دار مردوں نے اسے تماشہ بنالیا اور آئے روز کوئی افسوسناک معاملہ سامنے آجاتا ہے۔

برطانوی شہر یارک شائر میں بھی 36 سالہ شخص ڈینیئل میڈفرتھ نے ایک ایسی احمقانہ حرکت کرڈالی کہ نہ صرف ساری دنیا کے سامنے تماشہ بن گیا بلکہ زندگی بھی مشکل سے ہی بچی۔ اخبار ”دی میٹرو“ کے مطابق ڈینیئل اپنے دوست کے گھر پر تھا اور اس نے مذاق میں 35 عدد ویاگرا گولیاں کھالیں۔ اس حماقت کا نتیجہ یہ ہوا کہ اس پر مدہوشی کی کیفیت طاری ہوگئی اور آنکھوں کے سامنے ان دیکھے منظر اور کانوں میں عجیب و غریب آوازیں سنائی دینے لگیں۔

مزید پڑھیں: ایک موبائل ایپ جو آپ کو بڑے دھوکے سے بچا سکتی ہے

مزید شرمناک بات یہ ہوئی کہ مسلسل پانچ روز تک اس کے جسم میں شدید جنسی تحریک برقرار رہی اور وہ کسی کے سامنے جانے کے قابل نہ رہا۔ اسے دیکھنے والا ہر شخص، ڈاکٹروں اور نرسوں سمیت، اس پر ہنستا رہا۔ ڈینیئل نے اخبار کو بتایا کہ جنسی تحریک مستقل تو نہ تھی البتہ اس قدر زیادہ تھی کہ وہ خود کو چھپاتا پھررہا تھا۔ اسے دو دن تک ہسپتال میں رکھا گیا جس کے بعد اس کی حالت قدرے نارمل ہونا شروع ہوئی۔

ڈینیئل کی شرمناک حرکت پر اس کی بیوی نے بھی سخت ناراضی کا اظہار کیا لیکن ڈینیئل کا کہنا تھا کہ خوش قسمتی سے اس کی بیوی نے اب اسے معاف کردیا ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ڈینیئل خوش قسمت ہے کہ کچھ شدید جسمانی مسائل اور شرمندگی کے بعد اس کی حالت بہتر ہو رہی ہے، ورنہ اس کی حماقت کے نتیجے میں اس کی جان بھی جاسکتی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس