تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت قائم ہونے والی عدالت 9ماہ بعد بھی فعال نہ ہوسکی

تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت قائم ہونے والی عدالت 9ماہ بعد بھی فعال نہ ہوسکی
تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت قائم ہونے والی عدالت 9ماہ بعد بھی فعال نہ ہوسکی

  


لاہور(نامہ نگار)تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت قائم ہونے والی عدالت تربیت یافتہ عملہ نہ ملنے پرکام شروع نہ کرسکی،انتہائی حساس نوعیت کے مقدمات کی سماعت کے لئے قائم کی گئی یہ عدالت تاحال سکیورٹی سے بھی محروم ہے،عدالت کے جج مقرب خان نے ایس پی سکیورٹی کو سکیورٹی کے لئے مراسلہ بھجوایا ہے جس میں تربیت یافتہ نائب قاصداور گن مین کی تعیناتی کے لئے کہاگیاہے ،مراسلہ میں کہاگیا ہے کہ عدالت کے فعال نہ ہونے کی وجہ سے ملزمان اور وکلاء سخت مشکلات کا شکار ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جنوری میں تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت لاہور میں عدالت قائم کی گئی اور مقرب خان کو اس کا جج مقرر کیاگیا،عدالتی سٹاف اور سکیورٹی سے محروم ہونے کی وجہ سے عدالت تاحال فعال نہ ہوسکی ہے ،عدالت میں ملکی سالمیت کے خلاف سازش کرنے والوں،اشتعال انگیز تقاریر کرنے والوں اور ممنوع مواد کی تقسیم کی ملوث ملزمان کے مقدمات کی سماعت کی جانی تھی،مگر سکیورٹی مقاصد کی وجہ سے عدالت تاحال کام شروع نہیں کرسکی ہے،ذرائع کے مطابق دوسری عدالتوں سے سٹاف عارضی طورپر اس عدالت میں تعینات کیاگیاہے جبکہ عدالت کے جج مقرب خان نے سکیورٹی کے لئے ایس پی سکیورٹی کو سکیورٹی فراہم کرنے کے لئے مراسلہ بھی بھجوایا گیا ہے ،مراسلے کے مطابق تربیت یافتہ نائب قاصداور گن مین کی تعیناتی کی درخواست کی گئی ہے،مزید کہا گیا ہے کہ عدالت کے فعال نہ ہونے کی وجہ سے ملزمان اور وکلا سخت مشکلات کا شکار ہیں۔

مزید : لاہور