تھانوں میں ایس ایچ اوز اور محرر کی غیر ضروری مداخلت ختم کرینگے،آئی جی

تھانوں میں ایس ایچ اوز اور محرر کی غیر ضروری مداخلت ختم کرینگے،آئی جی

  

لاہور(کرائم رپورٹر) عوام کوفوری انصاف کی فراہمی صرف اور صرف Paperless Policing سے ہی ممکن بنائی جا سکتی ہے اور اسی مقصد کے لئے پنجاب پولیس کے تمام شعبوں کی کمپیوٹرائزیشن کا عمل جاری ہے اور اس کے مکمل ہوتے ہی وقت اور پیسے کے ضیاع کی روک تھام کے ساتھ ساتھ عوام کو تھانوں میں ایس ایچ اوز اور محرر کی غیر ضروری مداخلت بھی ختم کی جاسکے گی اور یہی وجہ ہے کہ فرنٹ ڈیسک اور اس کے عملے کو زیادہ سے زیادہ Empoweredکیا جا رہا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب، مشتاق احمد سکھیرا نے سنٹرل پولیس آفس لاہور میں پنجاب پولیس کے مختلف شعبوں کی کمپیوٹرائزیشن کے عمل کی رفتار کا جائزہ لینے کے لئے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس میں فرنٹ ڈیسک، HRMIS، تنخواہوں کی کمپیوٹرائزیشن، لیگل برانچ کے لئے تیار کیے گئے سافٹ وےئر کے علاوہ بائیو میٹرک سسٹم،پولیس ویب سائٹ ،پولیس کمپلینٹ سنٹر، فنگر پرنٹس اور دیگر I.T basedپراجیکٹس کی رفتار کا تفصیلی جائزہ بھی لیا گیا ۔ آئی جی پنجاب کو فرنٹ ڈیسک کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے اے آئی جی فنانس، حسین حبیب امتیاز نے بتایا کہ فرنٹ ڈیسک کے لئے مزید1234اہلکاروں کی بھرتی کا عمل NTSکے ذریعے انتہائی شفاف طریقے سے مکمل کر لیا گیا ہے۔ جن میں 132سینئر سٹیشن اسسٹنٹ اور 1102پولیس سٹیشن اسسٹنٹ کو بھرتی کیا گیا ہے جن کا میڈیکل اور سیکیورٹی برانچ سے ویری فیکیشن کے علاوہ دیگر Formalitiesمکمل ہوتے ہی ٹریننگ کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔جس کے بعد انہیں فوری طور پر پنجاب بھر کے تمام تھانوں میں قائم کے جانے والے فرنٹ ڈیسکو ں میں تعینات کر دیا جائے گا۔

مزید :

علاقائی -