ہم سو رہے تھے کہ اچانک دھماکہ ہوا، ہر طرف چیخ و پکار، قیامت صغریٰ کا منظر تھا، زخمی مسافر

ہم سو رہے تھے کہ اچانک دھماکہ ہوا، ہر طرف چیخ و پکار، قیامت صغریٰ کا منظر ...

  

ملتان (وقائع نگار) ٹرین حادثہ کے زخمیوں کے مطابق رات گئے وہ سورہے تھے۔ اچانک دھماکہ ہوا اور بوگیاں الٹ گئیں۔ اس کے بعد افراتفری اور شور شرابہ مچ گیا۔ ہر کوئی مدد کیلئے پکارا رہا تھا۔ زخمیوں عزیز اسحاق، کریم بخش، شہزاد علی، علی بخش و دیگر کے مطابق موقع پر قیامت صغریٰ کا منظر تھا۔ ہر طرف خون ہی دکھائی دے رہا تھا۔ یوں لگ رہا تھا کہ بچنے کا کوئی راستہ نہیں۔ زخمی ایک دوسرے کی طرف ممد کیلئے دیکھ رہے تھے۔ مگر بوگیوں کے الٹنے اور خود بھی زخمی ہونے کی وجہ سے مدد کرنے سے قاصر تھے۔ زور دار دھماکہ اور جھٹکے کی وجہ سے سوئے افراد سہم کر اٹھ گئے، جو حاضر جاگ رہے تھے۔ انہیں فوری طور پر کچھ سمجھ نہ آیا کہ کیا ہوگیا ہے۔ کچھ لوگ اس کو دہشت گردی سمجھتے رہے بعد میں ہوش آنے کے بعد معلوم ہوا کہ ٹرین بوگیوں سے ٹکرا گئی تھی۔

مزید :

صفحہ اول -