مقبوضہ کشمیر میں بھارتی انسانیت سوز مظالم عالمی دُنیا کے لیے سوالیہ نشان ہے،برجیس طاہر

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی انسانیت سوز مظالم عالمی دُنیا کے لیے سوالیہ نشان ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیر برائے اُمور کشمیر و گلگت بلتستان چوہد ری محمد برجیس طاہر نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ جمہوریت کے عالمی دن کے موقع پر بھی بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم جاری رکھے ہوئے ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف عالمی برادری اوراقوام متحدہ جمہوریت کا عالمی دن منا رہے ہیں تو دوسری جانب نام نہاد سب سے بڑا جمہوری ملک ہونے کا دعویدار بھارت مقبوضہ کشمیر میں تاریخ کے بد ترین تشدد کا ارتکاب کر رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پچھلے تین ماہ سے بدترین تشدد کا سلسلہ تھمنے کو نہیں آ رہا اور مظلوم کشمیری عوام کو چھرے والی بندوقوں سے نشانہ بنایا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ صرف حالیہ تشدد کی لہر میں نوے سے زائد کشمیریوں کو شہیدکردیا گیا ہے اور 500 سے زائدکی آنکھیں شدید متاثر ہوئی ہیں جن میں سے بیشتر کو زندگی بھر کی نابینی کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا تمام مظالم اور بدترین تشدد اُس اقوام عالم اور بین الاقوامی برادری کے لیے سوالیہ نشان ہیں جو آج پوری دُنیا میں یوم جمہوریت منارہے ہیں۔وفاقی وزیر نے کہا کہ بھارت کے ذہن پر خون کی ہولی اس طرح سوار ہو چکی ہے کہ اُس نے مسلمانوں اور کشمیریوں کے مقدس تہوار عیدالضحیٰ پر بھی اپنا بھرپور تشدد جاری رکھا اور مظلوم کشمیری عوام نے عید الضحیٰ کرفیو اور آٹھ لاکھ جابر فوج کی بندوقوں کے سائے میں گزاری۔انہوں نے کہا کہ آخربھارت کب تک مظالمانہ ہتھکنڈوں ،کرفیواور کالے قوانین کے سہارے مقبوضہ کشمیر پر اپنی ناجائز تسلط جاری رکھ سکے گا۔چوہدری محمدبرجیس طاہر نے کہا کہ عید الضحیٰ مسلما نوں کو قربانی اور ایثار کا درس دیتی ہے اور کشمیر ی عوام بھی قربانی اور ایثار کے جذبے سے سرشار ہیں اور وہ کسی صورت میں بھی بھارت کے وحشی مظالم اور ہتھکنڈوں سے مرعوب نہیں ہونے والے۔انہوں نے کہا کہ غیور کشمیری عوام اپنے حق خودارادیت اور آزادی کے لیے اپنی تین نسلیں قربان کر چکے ہیں اور پرُامن تحریک آزادی اُن کی اگلی نوجوان نسل کے دلوں میں منتقل ہو چکی ہے جو قربانی کے جذبے سے سرشار آئے روز اپنے حق کے لیے اور پاکستان سے اپنی وابستگی کے اظہار کے لیے آٹھ لاکھ سے زائد بھارتی فوج کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر سبز ہلالی پرچم مقبوضہ کشمیر کے گلی چوراہوں پر لہرا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ خطے کی سلامتی اور خود بھارت کی ترقی کے لیے لازم ہے کہ بھارت دہایوں پر پھیلے تشدد اور ریاستی دہشت گردی کا راستہ ترک کرکے کشمیری عوام کا حق خودارادیت تسلیم کرے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں مقبوضہ کشمیر میں رائے شماری کرا کے پورے خطے میں دیر پا امن و سلامتی اور خوشحالی کی بنیاد ڈالے تاکہ دُنیا پر ثابت ہو سکے کہ بھارت جمہوریت پسند ملک ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -