پنجاب حکومت کا بے سہارا و نادار بچگان قانون کو سخت کرنے کا فیصلہ

پنجاب حکومت کا بے سہارا و نادار بچگان قانون کو سخت کرنے کا فیصلہ

  

لاہور (سپیشل رپورٹر) پنجاب حکومت نے بے سہارا و نادار بچگان کے قانون کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ کر لیا ۔سزاوں اور جرمانہ میں اضافہ کی منظوری کے بعد قانون پر عملدآمد چند روز میں ہو گا۔پنجاب حکومت کی جانب سے بے سہارا اور نادار بچگان کے حوالے سے موجود قانون کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ نئے تجویز کردہ قانون کے مطابق اگر کوئی شخص کسی بچے کو بھیک مانگنے یا منگوانے کے لیے اپنی تجویل میں رکھتا ہے اور اس کو زیادہ سے زیادہ پانچ سال قید اور کم از کم تین ماہ قید ہو گی جبکہ ایسے جرم کو دس ہزار سے ایک لاکھ روپے جرمانہ بھی ہو سکتا ہے اسطرح ردی دھجی اٹھانے کے لیے کسی بچے کو ورغلا یا اس کو ملازمت پر رکھنے والوں کو تین ماہ سے تین سال تک قید اور دس ہزار سے ایک ہزار روپے جرمانہ ہو گا۔ کسی بچے کو بے ہوش کرنا یا نشہ اور دوائی پلانے والے کو پانچ سال قید اور ہزار تک جرمانہ ہو گا ، مذکورہ ترمیم شدہ قانون پر آنیدہ چند روز میں پنجاب اسمبلی سے باقاعدہ منظوری کے بعد عمل درآمد ہوگا۔

مزید :

صفحہ آخر -