کاہنہ، نشے میں دھت تیز رفتار ٹرک ڈرائیور نے سکول جاتے 4بچوں کو کچل دیا، تین جاں بحق، ایک زخمی

کاہنہ، نشے میں دھت تیز رفتار ٹرک ڈرائیور نے سکول جاتے 4بچوں کو کچل دیا، تین ...

  

لا ہور (کرائم رپورٹر) کا ہنہ کے علا قہ میں ایک تیز رفتار اور نشے میں دھت ٹرک ڈرائیورنے 4بچوں کوکچل ڈالا، حادثے کے نتیجے میں 3بچے موقع پر ہی جاں بحق اور ایک زاخمی ہو گیا۔ڈرائیور ٹرک چھوڑکرموقع سے فرارہوگیا ،بچو ں کی لا شیں گھر پہنچنے پر کہرا م مچ گیا ،بچو ں کی لا شیں دیکھ کر ہر آ نکھ اشکبا ر ہو گئی۔محلے داروں نے ٹر ک ڈرائیو کے خلا ف شد ید احتجا ج کر تے ہو ئے پو لیس اور ضلعی انظا میہ کے خلا ف نعرے با زی کی۔ پو لیس نے مو قع پر پہنچ کر حا لا ت قا بو میں کیے۔ بتا یا گیا ہے کہ کا ہنہ کے علا قہ بیدیاں روڈ پر ایک تیز رفتار ٹرک ڈرائیو ر نے بے قابو ہوکر سکول جاتے ہوئے بچوں کو کچل ڈالا ۔ زخمیوں کو قریبی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ایک اور زخمی بچہ بھی دم توڑگیا۔جاں بحق ہونے والے بچوں میں 1سالہ عادل، 8 سالہ انیس اور اڑھائی سالہ فاطمہ شامل ہیں۔ بچو ں کی ہلا کت کی اطلا ع پا کر ان کے اہل خا نہ جب مو قع پر پہنچے تو وہا ں بچو ں کی کتا بیں سڑک پر بکھر ی ہو ئی تھیں اور ان کے بیگ پھٹ چکے تھے ۔ سڑ ک پر بچو ں کی بکھر ی ہو ئی کتا بیں اور جگر گو شو ں کی لا شیں دیکھ کر والد ین ثا بت قد م نہ رہ سکے ۔ اپنے جگر گو شو ں جنہیں ان کی ممتا نے اپنے ہا تھو ں سے بنا سنوار کر بیگ میں کھانے کے ٹیفن دے کر بھیجا تھا اب وہ انہیں خو ن میں لت پت دیکھ کر کسی کو غشی کے دورے اور کسی پر بے ہو شی کے دورے پڑ رہے تھے ۔ کو ئی سڑک پر ٹکر یں اور کوئی دو نو ں ہا تھو ں سے پا گلو ں کی طر ح آہو ہ پکا ر کر رہا تھا ۔ بچو ں کے خو بصورت چہر ے خون میں لت پت ہو چکے تھے ۔غمزدہ اہل خا نہ کو دیکھ کر مقامی لوگو ں نے سڑک بلاک کر دی اور ضلعی انتظا میہ کے خلا ف بھر پور احتجا ج کیا گیا ۔ بعد ازاں پولیس نے ٹرک قبضے میں لیکر ڈرائیور کی تلاش شروع کر دی ۔بچو ں کی لا شیں گھر پہنچنے پر کہرا م مچ گیا ،بچو ں کی لا شیں دیکھ کر ہر آ نکھ اشکبا ر ہو گئی۔اس مو قع پر کئی محلے دار خو اتین بھی بچو ں کی ہلا کت پر آ نسو بہا تی رہی ۔ جا ں بحق بچو ں عادل،انیس اور اڑھا ئی سالہ فاطمہ کے والد ین اور دیگر رشتے دارو ں نے روز نامہ پاکستا ن سے گفتگو کر تے ہو ئے کہا کہ بچے ایک انمو ل تحفہ ہیں اور ان کا کو ئی نعم البد ل نہیں پاکستان میں بچو ں کی ہلاکت کایہ پہلا واقعہ نہیں ۔ یہاں لا قانو نیت ہے انا ڑی ڈرائیوروں کو مر نے کے لا ئسنس فراہم کر دیے جا تے ہیں حا دثے میں جا ں بحق افراد کے ملز موں کے خلا ف سخت اقدامات کر نے کی اشد ضرورت ہے ۔بچے کی لاش ابھی گھر پڑی ہو تی ہے کہ حا دثے کے ملزموں کو رہا ئی بھی مل جا تی ہے ،۔ضرورت اس امر کی ہے حادثات کے مقد ما ت میں سزائیں بڑھا ئی جا ئیں تا کہ آئے روز سڑکو ں پر خو نی کھیل بند ہو سکے ۔

مزید :

صفحہ آخر -