سپریم کورٹ میں پانامہ نظر ثانی اپیلوں کی سماعت کے دوران عدالت نے شیخ رشید کے سربراہ کی سرزنش کردی

سپریم کورٹ میں پانامہ نظر ثانی اپیلوں کی سماعت کے دوران عدالت نے شیخ رشید کے ...
سپریم کورٹ میں پانامہ نظر ثانی اپیلوں کی سماعت کے دوران عدالت نے شیخ رشید کے سربراہ کی سرزنش کردی

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ میں پانامہ نظر ثانی اپیلوں کی سماعت کے دوران عدالت نے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ کی سرزنش کردی، شریف خاندان اور حکومتی مشینری کے خلاف الزام ترشیوں سے روکتے ہوئے کہا کہ کیس سے غیر متعلق گفتگو سے گریز کریں، عدالتی احترام کا خیال رکھیں۔

پانامہ کیس کے دوران پانچ رکنی لارجر بنچ کے سربراہ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے شیخ رشید احمد کو دوران دلائل غیر متعلقہ گفتگو سے ٹوک دیا۔ جمعہ کو سماعت کے دوران جب عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے دلائل دیتے ہوئے الزام عائد کیا کہ شریف خاندان کی جانب سے عدالتی فیصلوں کے خلاف پولیس کو سادہ کپڑوں میں سڑکوں پر لایا گیا، ادارے ٹھیک ہوں تو جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہوتا، اس پر جسٹس آصف سعید کھوسہ نے انہیں ٹوکتے ہوئے ہدایت کی کہ آپ الزامات نہ لگائیں بلکہ اپنی درخواست سے متعلق دلائل دیں، جس پر شیخ رشید احمد نے کہا کہ حدیبیہ کیس ہی تمام کرپشن کی ماں ہے، حدیبیہ سے ہی فلیٹ سمیت تمام مقدمات نکلے جب کہ عدالت میں بیان دے کر نیب حکام مکر گئے ہیں۔

چیئرمین نیب کیلئے کوئی نام سامنے نہیں آیا،اپوزیشن لیڈر لانا تحریک انصاف کا جمہوری حق ہے، خورشید شاہ

اس موقع پر پراسیکیوٹر جنرل نیب وقاص قدیر ڈار نے کہا کہ شیخ صاحب نے تو مجھے بھی نہیں بخشا، عدالت کو یقین دلاتا ہوں کہ ایک ہفتے میں حدیبیہ پیپر ملز کیس میں اپیل دائر کردی جائے گی۔

مزید :

اسلام آباد -