کراچی تا پشاور ریلوے لائن کی اپ گریڈنگ کرینگے، چین

کراچی تا پشاور ریلوے لائن کی اپ گریڈنگ کرینگے، چین

بیجنگ(آئی این پی) سی پیک کے تحت ریلوے لائن ایم ایل ۔1 کی اپ گریڈنگ ہوگی۔اس سلسلے میں نیشنل ریلوے ایڈمنسٹریشن آف چائنہ(این آر اے سی) اور پاکستان کی وزارت ریلوے کے درمیان منصوبے پر ابتدائی کام کرنے کے لیے معاملات طے پا گئے ہیں۔یہ منصوبہ سی پیک کا جلد مکمل ہونے والا منصوبہ ہے۔ نیشنل ریلوے ایڈمنسٹریشن آف چائنہ کے ذرائع کے مطابق ایم ایل ۔1ریلوے ٹریک کراچی تا پشاور براستہ لاہور 1872کلو میٹر طویل ہے۔اس کے پہلے مرحلے میں 3.2ارب ڈالر کی سرمایہ کاری سے چار حصوں کی اپ گریڈنگ کی جائے گی۔ریلوے کے ذریعے سامان کی نقل وحرکت کے لیے اپ گریڈنگ کی ضرورت عرصہ دراز سے محسوس کی جارہی تھی۔اب اپ گریڈنگ سے سامان کی نقل وحرکت کی یہ دیرینہ ضرورت پوری ہوجائیگی۔جو گزشتہ کئی دہائیوں سے نمایاں طور پر سامنے آرہی تھی۔1970کی دہائی میں پاکستان ریلوے کے ذریعے ملکی سامان کے70فیصد کی نقل وحمل ہوتی تھی جوکہ آج کل صرف چار فیصد رہ گئی ہے۔پاکستان ریلوے کو توقع ہے کہ اس منصوبے کی تکمیل سے یہ شرح بیس فیصد تک پہنچ جائے گی۔ اور اس سے 5سے 25ملین تک سامان کی نقل وحمل ہوسکے گی۔جبکہ ریلوے کے ذریعے سفر کرنیو الے افراد کی تعداد میں بھی 45فیصد کا اضافہ ہوگا اورسالانہ 55سے80ملین افراد سفر کرسکیں گے۔دریں اثنا قومی ادارہ اعدادو شمار کی طرف سے جاری ہونے والے اعدادو شمار کے مطابق چار اپ اور چار ڈاؤن تیز رفتار ریلوے نیٹ ورک منصوبے مکمل ہوچکے ہیں ۔

جو چین کی مدد سے مکمل ہوئے ہیں۔چین دنیا کا پہلا ملک ہے جس نے تیز رفتار گاڑیوں کے نیٹ ورک مکمل کیے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ2017 کے اختتام پر چین میں ریلوے لائنوں کی کل لمبائی 127000کلو میٹر ہوگئی ہے۔جبکہ تیز رفتار ریلوے لائنوں کی لمبائی چین میں 25200کلو میٹر ہے۔ جو دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔رپورٹ میں مزید کہاگیا ہے کہ تیزر رفتار ریلوے کے ذریعے شہریوں کی زندگی میں سہولت پیدا ہوتی ہے بلکہ اس سے علاقائی وسائل کی مساویانہ تقسیم کو فروغ حاصل ہوتا ہے۔

مزید : کامرس