سندھ متروکہ وقف املاک،20ارب کی زمین پر با اثر افراد کے قبضہ کا انکشاف

سندھ متروکہ وقف املاک،20ارب کی زمین پر با اثر افراد کے قبضہ کا انکشاف

کراچی(این این آئی)سندھ میں متروکہ وقف املاک بورڈ کی 20 ارب کی زمین پر بااثر افراد کے قبضے کا انکشاف، کراچی اور حیدرآباد میں متروکہ وقف املاک بورڈ کی 6 ارب سے زائد مالیت کی جائیداد پر بااثر افراد نے افسران کی ملی بھگت سے قبضہ کرلیا۔ کرائے پر دی گئی 10 ارب کی جائیداد دیکھ بھال نہ ہونے سے قبضے میں چلی گئی، متروکہ وقف املاک بورڈ کے افسران کی دانستہ غفلت و لاپروائی سے سندھ میں 20 ارب روپے مالیت سے زائد کی جائیدادوں پر قبضوں کاانکشاف ہوا ہے صرف کراچی اور حیدرآباد میں متروکہ وقف املاک کی 6 ارب روپے سے زائد مالیت کی قیمتی جائیداد افسران اور ماتحت عملے کی نااہلی سے قابضین کے کنٹرول میں چلی گئی۔ ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے ملک بھر میں وفاقی حکومت کی ملکیت سرکاری اراضی اور جائیداد پر قبضوں کی تفصیلات طلب کیے جانے پر مرتب رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے، متروکہ وقف املاک کی کراچی اور حیدرآباد میں اربوں روپوں کی قیمتی جائیدادوں پر قبضہ کیا گیا ہے اور قبضہ کرانے میں متروکہ وقف املاک کے افسران ملوث ہیں۔ کراچی میں رتن تلا، آرام باغ، لیاری، پریڈی کوارٹرز، ریڈیو پاکستان کراچی کے قریب 4 ارب روپے سے زائد مالیت کی قیمتی اراضی جن پر عارضی مکانات تعمیر کرکے کرائے پر دیے گئے تھے قبضہ کرلی گئی ہے۔ اسی طرح حیدرآباد میں ایک ارب روپے سے زائد مالیت کی متروکہ وقف املاک کی ملکیت سرکاری ریکارڈ میں جعلسازی کرکے کھوکھر محلہ کی قدیم درگاہ و مسجد محبت شاہ بخاری قبرستان اور متروکہ وقف اراضی بااثر چند خاندانوں نے اپنے نام منتقل کرالی۔ وزیراعظم ٹاسک فورس کو ارسال کی جانے والی رپورٹ میں متروکہ وقف املاک کی جائیداد پر قبضہ کرانے میں متروکہ وقف املاک کے سرویئر اور انسپکشن پرمامور ملازمین اور اعلی افسران کو ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے۔

جائیداد قبضہ؍انکشاف

مزید : علاقائی