ٹانک پانی بحران ، ضلعی انتظامیہ کا پاک آرمی کے تعاون سے ٹھوس اقدامات کا فیصلہ

ٹانک پانی بحران ، ضلعی انتظامیہ کا پاک آرمی کے تعاون سے ٹھوس اقدامات کا فیصلہ

ٹانک(نمائندہ خصوصی)ٹانک شہر میں پانی کے بحران کے خاتمہ کے لئے ضلعی انتظامیہ کا پاک آرمی کے تعاون سے سخت اقدامات اٹھانے کا فیصلہ زام سے آنے والے پانی کی گزرگاہوں میں روکاوٹیں ڈالنے اور پانی کی چوری میں ملوث افراد کو تین ایم پی او کے تحت کاروائی کر کے جیل میں ڈالنے کا فیصلہ ٹانک میں پینے کے پانی کے بحران سے نمٹنے کے لئے پاک آرمی کے بیس کیمپ ڈگری کالج ٹانک میں ایک اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں پاک آرمی کے کمانڈنگ آفسیر لیفیٹنٹ کرنل الطاف بلوچ ،ڈپٹی کمشنر شاہ رخ علی خان ،ڈسٹرکٹ پولیس آفسیر محمد عارف خان ،میجر عاطف خان سواتی ،تحصیل ناظم ہیبت خان بیٹنی، اسسٹنٹ کمشنر علی رضا،ٹی ایم او قدرت اللہ مروت ،محکمہ آبپاشی اور تحصیل میونسپل انتظامیہ کے دیگر اہلکاروں نے شرکت کی اجلاس میں پینے کے پانی کے بحران پر قابو پانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھانے پر غوروغوض کیا گیا تحصیل ناظم اور تحصیل میونسپل آفسیر نے پانی کے بحران پر پاک آرمی کے حکام اور ڈپٹی کمشنر کو بریفینگ دی انہوں نے شرکاء کو بتایا کہ بجلی نہ ہونے اور زام سے آنے والے پانی کو راستے میں روکاوٹیں ڈال کر پانی کا رخ موڑ دینے سے پانی کے بحران نے شدت اختیار کر لی ہے ڈپٹی کمشنر شاہ رخ علی خان کا کہنا تھا کہ شہربھر میں پینے کے پانی کے بحران کے خاتمہ کے لئے سب کو ملکر کام کرنا ہو گا اور اس کے لئے موجودہ حالات میں عملی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے تاکہ شہریوں کو پانی کی سپلائی جاری رہ سکے انہوں نے کہا کہ زام کے راستے آنے والے پانی کو تلابوں میں پہنچے سے پہلے ہی چوری کر لیا جاتا ہے جو کہ ایک گھناؤنا فعل ہے جس کو کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جائیگا انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ اپنے دستیاب وسائل میں تحصیل میونسپل انتظامیہ کو مکمل مدد فراہم کر رہی ہے اور ٹانک کے آٹھ ٹیوب ویلز کو سولر پر منتقل کرانے کے لئے اقدامات جاری ہیں انہوں نے کہا کہ پانی کی چوری کو روکنے کے لئے اب سخت اقدامات ناگزیر ہو چکے ہیں جس کے لئے تمام وسائل کو استعمال میں لایا جائیگا کمانڈنگ آفسیر لیفیٹنٹ کرنل الطاف بلوچ کا کہنا تھا کہ ٹانک میں پانی کے بحران سے نمٹنے کے لئے پاک آرمی ضلعی اور تحصیل میونسپل انتظامیہ کو ہر ممکن مدد فراہم کرے گی تاکہ شہریوں کا پانی کا مسئلہ حل ہو سکے اجلاس کے اختتام پر پینے کے پانی کی چوری میں ملوث افراد کے خلاف فوری طور پر سخت کاروائی عمل میں لانے کا فیصلہ کیا گیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر