گھوٹکی میں ہندو برادری کی املاک اور عبادتگاہوں کو نقصان پہنچانا قابل مذمت : چیئرمین پاکستان علماءکونسل حافظ طاہر اشرفی

گھوٹکی میں ہندو برادری کی املاک اور عبادتگاہوں کو نقصان پہنچانا قابل مذمت : ...
گھوٹکی میں ہندو برادری کی املاک اور عبادتگاہوں کو نقصان پہنچانا قابل مذمت : چیئرمین پاکستان علماءکونسل حافظ طاہر اشرفی

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) گھوٹکی میں ہندو برادری کی املاک اور عبادتگاہوں کو نقصان پہنچانا قابل مذمت ہے، توہین رسالت ﷺ کے مجرم پر مقدمہ کا اندراج اور گرفتاری کے بعد ہندو برادری کی املاک کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف فوری کارروائی ہونی چاہیے۔ گھوٹکی کے واقعات کی مکمل اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کی جائیں۔ اسلام اور آئین پاکستان غیر مسلموں کے حقوق کے مکمل تحفظ کا ضامن ہے۔ یہ بات چیئرمین پاکستان علماءکونسل اور صدر وفاق المساجد والمدارس پاکستان حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ، مولانا اسد زکریا ، مولانا حسین احمد درخواستی ، مولانا شفیع قاسمی ، مولانا عبدالمجید پتافی، مولانا اعظم فاروقی، مولانا عبدالکریم ندیم ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا عمار بلوچ نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہی۔

انہوں نے کہا کہ اسلام اور آئین پاکستان غیر مسلموں کے حقوق کا محافظ ہے۔ اگر کوئی توہین رسالت ﷺ کا مرتکب ہوا ہے تو اس کے خلاف قانون موجود ہے لیکن توہین رسالت ﷺ کے مجرم کے خلاف مقدمہ درج ہونے اور گرفتاری کے بعد ہندو برادری کی املاک کو جلانے والوں نے اسلام اور مسلمانوں کی کوئی خدمت نہیں کی ہے۔ اسلام مسلمانوں کی ریاست میں غیر مسلمانوں کی جان و مال عزت آبرو کا تحفظ کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گھوٹکی کے واقعہ کی مکمل تحقیقات ہونی چاہئیں اور اصل حقائق قوم کے سامنے لانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان علماءکونسل کا دس رکنی وفد گھوٹکی کا دورہ کرے گا اور مسلمانوں اور ہندو برادری کے نمائندوں سے ملاقات کرے گا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...