ہمارے ساتھ 22 نکاتی وعدہ پورا کیا جائے‘ لیویز اہلکار

  ہمارے ساتھ 22 نکاتی وعدہ پورا کیا جائے‘ لیویز اہلکار

  

باڑہ(نمائندہ)28 ہزار فورس کے ساتھ ظلم اور ناانصافی بند کیا جائے قبائلی اضلاع کے لیویز اور خاصہ دار فورس کو اپنا حق دو ہمارے ساتھ 22 نکاتی وعدے پورا کیا جائے۔ اپنے حقوق کے حصول کیلئے باقاعدہ تحریک شروع کر دینگے خاصہ دار لیویز شہدا کے خالی ویکنسیوں پر ان کے بچوں بھرتی کیا جائے حکومت کی جانب سے اپنے حقوق اور مراعات کے حوالے سے کیے گئے وعدوں میں بار بار خلاف ورزی نے واردی میں احتجاج پر مجبور کر دیئے ہیں  ہم بظاہر پولیس لیکن پولیس کی مراعات نہیں دیئے جاتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار آل فاٹا اور ایف آر خاصہ دار، لیویز اہلکاروں فورس کے باڑہ میں منعقدہ گرینڈ اجلاس کے موقع پر کیا گیا۔ اجلاس میں آل فاٹا خاصہ دار لیویز فورس کے سینکڑوں اہلکاروں، کمیٹی چیئرمین سید جلال اور قبائلی ملکانان سمیت باڑہ تاجران نے بھی شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ ال فاٹا و ایف ار خاصہ دار لیویز فورس اپنے حقوق کیلئے باقاعدہ تحریک شروع کر دینگے کیونکہ حکومت نے ہم سے بار بار وعدوں کی خلاف ورزی کرکے ہمیں وردی میں احتجاج پر مجبور کیا ہے انہوں نے کہا کہ آل فاٹا خاصہ دار لیویز فورس بظاہر پولیس لیکن مراعات پولیس کی نہیں دیئے جاتے ہیں۔انہوں نے لیویز خاصہ دار فورس کے شہدا کے خالی آسامیوں پر ان کے بچوں بھرتی کیا جائے۔20 ستمبر تک ہمارے مطالبات نہ مانے تو بڑا ایشو بن جائے گا۔ انہوں نے وزیراعظم، وزیر اعلی اور کورکمانڈر سے جلد لیویز خاصہ دار فورس کے مطالبات حل کرنے کا مطالبہ کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -