سانحہ موٹر وے، ملزم شفقت علی 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل، شناخت پریڈ کی استدعا منظور

  سانحہ موٹر وے، ملزم شفقت علی 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل، شناخت پریڈ ...

  

 لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت کے ارشد حسین بھٹہ نے لاہور سیالکوٹ موٹر وے پر دوران ڈکیتی خاتون سے بداخلاقی کرنے والے ملزم شفقت علی عرف بگا کو14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوادیا ہے جبکہ عدالت نے پراسکیوشن کی ملزم کی شناخت پریڈ کی استدعا منظور کر لی ہے۔دوران سماعت فاضل جج نے ملزم کومخاطب کرتے ہوئے کہا ہاں تم نے کچھ کہنا ہے تو بتاؤ؟جس پر ملزم نے کہا کہ بس جی مہربانی کر دیں، فاضل جج نے کہا کہ کیا مہربانی کریں؟ملزم شفقت نے کہا کہ مجھے چھوڑ دیں، جس پر فاضل جج نے کہا کہ تمہارا ڈی این اے میچ کر گیا ہے، تم نے کچھ نہیں کیا ہو گا تو چھوٹ جاؤ گے۔گزشتہ روز تھانہ گجر پورہ پولیس نے ملزم شفقت کو بکتر بند گاڑی میں لاکر عدالت میں منہ پر کپڑا ڈال کر پیش کیا گیا،اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے،پراسیکیوشن کی جان سے عدالت میں استدعا کی گئی کہ ملزم کی شناخت پریڈ کروانی ہے، اسے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا جائے،تفتیشی افسر ذوالفارانسپکٹرنے ملزم کے خلاف مقدمہ کا ریکارڈ پیش کرتے ہوئے  عدالت کو مزید بتایا کہ ملزم کا ڈی این اے میچ کر گیا ہے، ملزم کو گزشتہ روز دیپالپور سے گرفتار کیا گیاہے،شفقت علی عرف بگا کی شناخت پریڈ کروانی ہے، ملزم کا ڈی این اے ابتدائی طور پر متاثرہ خاتون سے میچ کر گیا ہے، ملزم شفقت کی نشاندہی پر مرکزی ملزم عابد کو بھی گرفتار کرنا باقی ہے اورملزم سے پستول اور ڈنڈا برآمد کرنا بھی باقی ہے، فاضل جج نے پراسیکیوشن کی استدعامنظور کرتے ہوئے حکم دیاہے کہ ملزم کی شناخت پریڈ کیلئے خصوصی انتظامات کئے جائیں اورخیال رکھا جائے کہ ملزم دوسرے ملزموں کیساتھ شامل نہ ہو سکے، تفتیشی افسر جلد از جلد ملزم کی شناخت پریڈ کروائے، عدالت نے حکم دیا کہ ملزم کو 29 ستمبر دوبارہ عدالت میں پیش کیا جائے،واضح رہے کہ اس سے قبل انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج ارشد حسین بھتہ لاہورہائی کورٹ میں ایک میٹنگ میں مصروف ہونے کی بنا پر عدالت میں موجود نہیں تھے جس پر پولیس نے ملزم کو سیشن کورٹ میں پیش کیاجہاں قائم مقام سیشن جج مصباح خان نے کیس کی ابتدائی سماعت کی،دوران سماعت ہی عدالت کوپراسیکیوٹر نے بتایا کہ انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج اپنی عدالت پہنچ گئے ہیں لہذا ملزم کو وہاں پیش کرنے کی اجازت دی جائے جس پر فاضل جج نے ملزم کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کرنے کی اجازت دے دی،جس کے بعد پولیس ملزم کو بکتر بند گاڑی میں لیکر سیشن عدالت سے روانہ ہو گئی تھی۔

جیل منتتقل

مزید :

صفحہ اول -