خواتین پرتشدد،زیر تفتیش مقدمات کے ملزمان گرفتار کرنیکا حکم 

      خواتین پرتشدد،زیر تفتیش مقدمات کے ملزمان گرفتار کرنیکا حکم 

  

 ڈیرہ غازی خان(سٹی رپورٹر)ڈیرہ غازیخان ریجن میں خواتین پر تشدد روکنے کیلئے موثر قانونی کارروائی کا فیصلہ کیاگیاہے زیر تفتیش مقدمات کے ملزمان کی فوری گرفتاری کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں تشدد کی شکار خاتون کو شکایت کیلئے تھانے آنے کی ضرورت نہیں ہو گی ٹیلیفون اور دیگر ذرائع سے رپورٹ درج کرائی جاسکے گی پولیس افسران سوشل میڈیا پر آنے(بقیہ نمبر14صفحہ10پر)

 والی معلومات کو سامنے رکھتے ہوئے موقع پر جائیں گے شواہد اکٹھے کرنے کے ساتھ خاتون کا میڈیکل اور دیگر قانونی کارروائی مکمل کریں گے مجرموں کو نشان عبرت بنانے کیلئے مقدمہ میں تمام قانونی دفعات شامل کی جائیں گی اور پولیس افسران مقدمہ سے پہلے قانونی ٹیم سے مشاورت بھی کریں گے ریجنل پولیس آفیسر ڈیرہ غازیخان محمد فیصل رانا نے ریجن بھر کے افسران کو واضح ہدایات جاری کر دی ہیں آر پی او نے چاروں اضلاع میں گھریلو تشددکی شکار خواتین کے زیر تفتیش مقدمات کی بھی رپورٹ طلب کر لی انہوں نے کہاکہ خواتین کے خلاف تشدد کو روکنے کے لئے پیش بندی اقدامات کے طور پر آگاہی مہم بھی شروع کی جائے، خواتین اگر خود پرگھریلو تشدد کی اطلاع ٹیلی فون پر دیں تو پولیس موقع پر پہنچ کر خود کارروائی کرے آر پی او نے کہاکہ خواتین پر گھریلو تشدد معاشرے کے خاندانی سسٹم کو بھی تباہ کر دیتا ہے فیصل رانا نے کہا کہ گھریلو تشدد کے اکثر واقعات میں پولیس افسران ایف آئی آر کے اندراج کے وقت وہ تمام دفعات نہیں لگاتے جو قانون کے مطابق لگنی چاہئیں جس کی وجہ سے خواتین کو تشدد کا نشانہ بنانے والے ملزمان قانونی مو شگافیوں کی وجہ سے ریلیف لے کر رہا ہو جاتے ہیں آر پی او نے کہا کہ گھریلو تشدد کا شکارہونے والی خواتین کو اکثر اوقات ملزمان تھانوں تک پہنچنے نہیں دیتے اور خواتین پر تشددکے تمام ثبوت مٹا دئیے جاتے ہیں فیصل رانا نے کہا کہ خواتین پر تشدد کے زیر تفتیش مقدمات کے تمام ملزمان گرفتار کئے جائیں اور انہیں ایک مقررہ مدت میں تفتیشی حوالے سے یکسوکر کے ملزمان کو عدالت میں پیش کیا جائے اس حوالے سے ان کے دفتر کو روزانہ کی بنیاد پر آگاہ رکھا جائے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -